ہوم » نیوز » عالمی منظر

ڈونالڈ ٹرمپ کا ایک اور متنازع بیان ، امریکہ میں نسلی تجزیہ کی وکالت کی

واشنگٹن : ایک اور متنازع تبصرہ کرتے ہوئے ریپبلکن پارٹی سے صدارتی امیدوار ڈونالڈ ٹرمپ نے کہا ہے کہ امریکہ کو اورلینڈو جیسی فائرنگ کے واقعات سے بچنے کے لئے نسلی بنیاد پر ریکارڈ رکھنے کے بارے میں سوچنا شروع کردینا چاہئے ۔

  • Agencies
  • Last Updated: Jun 20, 2016 12:13 AM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
ڈونالڈ ٹرمپ کا ایک اور متنازع بیان ، امریکہ میں نسلی تجزیہ کی وکالت کی
واشنگٹن : ایک اور متنازع تبصرہ کرتے ہوئے ریپبلکن پارٹی سے صدارتی امیدوار ڈونالڈ ٹرمپ نے کہا ہے کہ امریکہ کو اورلینڈو جیسی فائرنگ کے واقعات سے بچنے کے لئے نسلی بنیاد پر ریکارڈ رکھنے کے بارے میں سوچنا شروع کردینا چاہئے ۔

واشنگٹن : ایک اور متنازع تبصرہ کرتے ہوئے ریپبلکن پارٹی سے صدارتی امیدوار ڈونالڈ ٹرمپ نے کہا ہے کہ امریکہ کو اورلینڈو جیسی فائرنگ کے واقعات سے بچنے کے لئے نسلی بنیاد پر ریکارڈ رکھنے کے بارے میں سوچنا شروع کردینا چاہئے ۔ اس سلسلے اسرائیل اور دیگر ممالک کا حوالہ دیتے ہوئے 70 سالہ ٹرمپ نے کہا کہ کرنے کے لئے یہ سب سے بری چیز نہیں ہے ۔


ٹرمپ نے ایک انٹرویو میں میں کہا کہ دیگر ملک ایسا کر رہے ہیں ۔ آپ اسرائیل کو دیکھئے اور دیگر ممالک کو دیکھئے ۔ وہ ایسا کر رہے ہیں اور وہ کامیابی سے کر رہے ہیں ۔ میں تجزیوں کے تصور سے نفرت کرتا ہوں، لیکن ہمیں عام سمجھ کی شروعات کرنی ہوگی اور ہمیں اپنے دماغ کا استعمال کرنا پڑے گا ۔


انٹرویو میں ٹرمپ نے کہا کہ اگر مسلم کمیونٹی ایسی مشتبہ چیزوں کی معلومات دیتا ، تو اورلینڈو جیسی وحشیانہ فائرنگ سے بچا جا سکتا تھا ۔ ٹرمپ نے کہا کہ اورلینڈو کے شوٹر عمر نے حملے سے پہلے خطرے کا اشارہ دیا تھا ۔


ٹرمپ نے کہا کہ آپ اس کے ماضی کو دیکھئے ۔ میں نے اس کے جیسا ماضی کسی کا نہیں دیکھا ۔ اس کے اسکول کے ریکارڈ دیکھئے، آپ کو بہت سی دوسری چیزوں کو دیکھیں گے ۔ ٹرمپ نے بتایا کہ وہ قومی رائفل ایسوسی ایشن کے ساتھ کام کر رہے ہیں ، تاکہ ایک ایسی پالیسی تیار کی جا سکے کہ مشتبہ فہرست میں شامل لوگوں کو بندوق خریدنے کی اجازت نہیں ملے ۔
First published: Jun 20, 2016 12:13 AM IST