உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    دبئی کنگ نے سابق بیوی کا فون کرایا ہیک، انکشاف کے بعد کورٹ میں کانپنے لگیں شہزادی حیا

     عدالت کا فیصلہ سننے کے بعد حیا بنت الحسین بہت ڈری ہوئی ہیں۔ وہ خود کو ایک شکار ، غیر محفوظ محسوس کر رہی ہے۔

    عدالت کا فیصلہ سننے کے بعد حیا بنت الحسین بہت ڈری ہوئی ہیں۔ وہ خود کو ایک شکار ، غیر محفوظ محسوس کر رہی ہے۔

    عدالت کا فیصلہ سننے کے بعد حیا بنت الحسین بہت ڈری ہوئی ہیں۔ وہ خود کو ایک شکار ، غیر محفوظ محسوس کر رہی ہے۔

    • Share this:
      لندن: دبئی کے حکمران شیخ محمد بن راشد المکتوم (Dubai's ruler Sheikh Mohammed bin Rashid al-Maktoum) پر اسرائیلی سافٹ ویئر پیگاسس سافٹ ویئر (Pegasus software) کے ذریعے اپنی سابقہ ​​بیوی کا فون ہیک کرنے کا الزام عائد کیا گیا ہے۔ لندن ہائی کورٹ میں شیخ محمد اور ان کی سابق ​​بیوی شہزادی حیا بنت الحسین (Princess Haya bint al-Hussein) کے درمیان طلاق کا مقدمہ چل رہا ہے۔ دونوں کے لیے بچوں کی کسٹڈی کے لیے قانونی جنگ ایک عرصے سے جاری ہے۔ بدھ کو عدالت نے انکشاف کیا کہ دبئی کے حکمران نے سابقہ ​​بیوی اور اس کے وکلاء کی فون کالز سنی تھیں۔ اس کے ذریعے وہ ڈرانے اور دھمکانے کی کوشش کر رہا تھا۔ شیخ محمد متحدہ عرب امارات کے نائب صدر اور وزیر اعظم ہیں۔

      عدالت نے اپنے فیصلے میں کہا کہ ہیکنگ کے علاوہ دبئی کے حکمران کے لیے کام کرنے والوں نے لندن میں حیا کی پراپرٹی کے قریب ایک حویلی خریدنے کی بھی کوشش کی تھی۔ عدالت کا فیصلہ سننے کے بعد حیا بنت الحسین بہت ڈری ہوئی ہیں۔ وہ خود کو ایک شکار ، غیر محفوظ محسوس کر رہی ہے۔

      جج نے کیا کہا
      جج اینڈریو میک فارلین نے کہا کہ کم از کم چھ فون کو نگرانی میں رکھا گیا تھا۔ جج نے یہ بھی کہا کہ شیخ محمد نے نہ صرف برطانیہ جانے سے پہلے اپنی سابق ​​بیوی کو تشدد کا نشانہ بنایا بلکہ اس کے بعد بھی اسے تشدد کا نشانہ بناتے رہے۔ اس سے قبل مارچ 2020 میں جج میک فارلین نے خدشہ ظاہر کیا تھا کہ ارب پتی شیخ محمد نے اپنی دو بیٹیوں کے اغوا کا حکم دیا تھا۔

      لندن بھاگ گئی تھیں شہزادی حیا
      72 سالہ محمد کی 47 سال کی حیا کے ساتھ بچوں کی کسٹڈی کے لیے طویل قانونی جنگ چل رہی ہے۔ اس میں کافی رقم بھی خرچ کی گئی ہے۔ حیا اپنے دو بچوں 13 سالہ بیٹی جلیلہ اور 9 سالہ بیٹے زید کے ساتھ برطانیہ فرار ہو گئی تھیں۔ انہوں نے کہا کہ انہیں اپنی حفاظت کا خوف ہے۔ ان کا اپنے ایک برطانوی باڈی گارڈ کے ساتھ بھی افیئر تھا۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: