اپنا ضلع منتخب کریں۔

    ایران اور یو اے ای میں زلزلے کے جھٹکے کیے گئے محسوس، ری ایکٹر اسکیل پر 5.6 رہی شدت

     ایران اور یو اے ای میں زلزلے کے جھٹکے کیے گئے محسوس، ری ایکٹر اسکیل پر 5.6 رہی شدت

    ایران اور یو اے ای میں زلزلے کے جھٹکے کیے گئے محسوس، ری ایکٹر اسکیل پر 5.6 رہی شدت

    ایران کی ریاستی ٹی وی نے بتایا کہ زلزلے کے جھٹکے محسوس کرنے کے بعد راحت اور بچاو کاموں کے لیے ریسکیو ٹیموں کو بھیجا گیا۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Iran
    • Share this:
      جنوبی ایران میں چہارشنبہ کو زلزلے کے درمیانی جھٹکے محسوس کیے گئے۔ یوروپین- میڈیٹیرینین سسمالوجیکل سینٹر (ای ایم ایس سی) نے بتایا کہ ری ایکٹر پیمانے پر زلزلے کی شدت 5.6 رہی۔ جنوبی ایران کے ساتھ ساتھ متحدہ عرب امارات میں بھی زلزلے کے جھٹکے محسوس کیے گئے۔

      زلزلے سے کوئی جانی نقصان نہیں
      ایران کی ریاستی ٹی وی نے بتایا کہ زلزلے کے جھٹکے محسوس کرنے کے بعد راحت اور بچاو کاموں کے لیے ریسکیو ٹیموں کو بھیجا گیا۔ حالانکہ، انہوں نے کہا کہ زلزلے سے کوئی جانی نقصان نہیں ہوا ہے۔ ای ایم ایس سی کے مطابق، زلزلے کی گہرائی 10 کلو میٹر تھی اور متحدہ عرب امارات میں راس الخیمہ شہر کے شمال مغرب میں قریب 88 کلومیٹر کی دوری پر اس کا مرکز تھا۔

      ترکیہ میں ایک ہفتہ قبل آیا تھا زلزلہ
      بتادیں کہ اس سے ایک ہفتہ قبل ترکیہ کے ایک شہر میں زلزلے کے تیز جھٹکے محسوس کیے گئے تھے۔ نیشنل سینٹر فار سسمالوجی کے حوالے سے دی گئی معلومات کے مطابق، ترکیہ کے انقرہ سے 186 کلومیٹر مغرب-شمال-مغرب میں 5.9 شدت کا زلزلہ آیا تھا۔ زلزلے کی گہرائی زمین سے 10 کلومیٹر نیچے تھی۔ زلزلے سے 50 لوگ زخمی ہوگئے اور کچھ عمارتوں کو نقصان پہنچا تھا۔

      یہ بھی پڑھیں:
      Pakistan Blast: کویٹا میں پولیس ٹرک پر خودکش حملہ، بچے سمیت 3 کی موت، 27 زخمی

      یہ بھی پڑھیں:
      انگلینڈ میں پہلی مرتبہ نصف سے بھی کم رہ گئی عیسائیوں کی آبادی، مسلم-ہندووں کی بڑھی تعداد

      انڈونیشیا میں زلزلے سے 268 لوگوں کی ہوئی موت
      وہیں، 21 نومبر کو انڈونیشیا میں تباہ کن زلزلہ آیا تھا، جس میں اب تک 268 لوگوں کی موت ہوگئی جب کہ 151 لوگ اب بھی لاپتہ بتائے جارہے ہیں۔ اس زلزلے میں ایک ہزار سے زائد لوگ زخمی بھی ہوئے ہیں۔ عہدیداروں کے مطابق، 600 سے زیادہ لوگوں کو معمولی چوٹیں بھی آئی ہیں۔ راحت رسانی کام ابھی بھی جاری ہیں، بڑی تعداد میں لوگ لاپتہ ہیں۔ اب تک تقریباً 13 ہزار لوگوں کو محفوظ بچایا جاچکا ہے وہیں تقریباً 2200 گھروں کو نقصان پہنچا ہے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: