ہوم » نیوز » عالمی منظر

مصر: طیارے میں سوار تمام 224 افراد کی موت، ایئر لائنز پر مقدمہ

قاہرہ۔ مصر نے آج اس بات کی تصدیق کر دی ہے کہ روس کا ایک مسافر بردار طیارہ وسطی سینا علاقے میں حادثہ کا شکار ہو گیا ہے۔

  • UNI
  • Last Updated: Nov 01, 2015 12:05 AM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
مصر: طیارے میں سوار تمام 224 افراد کی موت، ایئر لائنز پر مقدمہ
قاہرہ۔ مصر نے آج اس بات کی تصدیق کر دی ہے کہ روس کا ایک مسافر بردار طیارہ وسطی سینا علاقے میں حادثہ کا شکار ہو گیا ہے۔

قاہرہ:مصر کے سینا میں آج حادثہ کا شکار ہونے والے روسی طیارے میں سوار تمام 224 مسافر اور عملے کے رکن مارے گئے۔سیکورٹی ذرائع نے بتایا کہ ان میں سے کوئی بھی زندہ نہیں بچا ۔


ذرائع نے بتایا کہ تلاش اور بچاؤ ٹیم کے اراکین حادثہ کا شکار ہونے والے طیارے کے مسافروں کے باقیات جمع کر رہے ہیں۔ طیارے میں روس کے 214 اور یوکرین کے تین مسافر تھے۔ یہ اطلاع مصر ی کابینہ کے ایک بیان میں دی گئی ہے۔بیان میں بتایا گیا ہے کہ 217 مسافروں میں 138 خواتین، 62 مرد اور 17 بچے تھے۔


روس کی اعلی سطی تفتیشی کمیٹی نے اس حادثے کے لئے کوگلی مابیا ائیر لائنز کے خلاف مقدمہ شروع کیا ہے۔ حادثہ کا شکار ہونے والا طیارہ اےئربس ۔اے ۔321 مصر کے بحیرہ احمر کے شرم الشیخ سے روس کے سینٹ پیٹر س برگ کی پرواز پر تھا۔ سینائی کے وسطی حصے کے پہاڑی علاقے میں وہ گر کر تباہ ہو گیا. ریا نیوز ایجنسی نے خبر دی ہے کہ جانچ کمیٹی نے پرواز کے قوانین اور پرواز کی تیاری سے متعلق قانون کی خلاف ورزی کی بنیاد پر ائیر لائنز کے خلاف مقدمہ چلانے کا فیصلہ کیا ہے۔ ائیر لائنز کے خلاف دفعہ 263 کے تحت عدالتی کارروائی شروع کی جائے گی۔ اس درمیان تفتیشی حکام اور ماہرین کی ایک ٹیم ماسکو سے مصر روانہ ہو رہی ہے۔


روس کی انٹرفیکس نے کہا کہ روسی نقل و حمل کنٹرولر ایجنسی اس بات کی جانچ کرا رہی ہے کہ طیارے نے سیکورٹی کے قوانین پر عمل کیا یا نہیں۔ حکام نے ائیر لائنز کے دفاتر میں تحقیقات کی اورچند دستاویزات بھی ضبط کئے ہیں۔ ایجنسی نے آخری بار مارچ 2014 میں جب طیارے کی باقاعدہ سیکورٹی چیک کی تھی تب ضابطوں کی کوئی خلاف ورزی ملی تھی لیکن ایر لائنز نے طے شدہ وقت میں اسے درست کرلیا کر لیا تھا۔


طیارہ قاہرہ کے وقت کے مطابق صبح 5:51 بجے (ہندوستانی وقت کے مطابق 09:21 بجے) روانہ ہونے کے بعد راڈار سے لاپتہ ہو گیا تھاط سیکورٹی حکام کا کہنا ہے کہ طیارے کو مار گرائے جانے کی کوئی علامت نہیں ہے۔جس وقت طیارے لاپتہ ہوا وہ 31 ہزار فٹ کی اونچائی پر پرواز کر رہا تھا۔


روس کے صدر ولادیمیر پوٹن نے طیارے کے حادثے پر گہرے صدمہ کا اظہار کیا ہے اور اس میں مرنے لوگوں کے َ لواحقین سے تعزیت کا اظہار کیا ہے۔

First published: Oct 31, 2015 02:51 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading