اپنا ضلع منتخب کریں۔

    کولمبیا میں ’دردناک‘ لینڈ سلائیڈنگ، 34 افراد جائے واقعہ پر ہی ہلاک، دلخراش مناظر

    جولائی میں شمال مغربی کولمبیا میں تین بچے اس وقت ہلاک ہو گئے تھے

    جولائی میں شمال مغربی کولمبیا میں تین بچے اس وقت ہلاک ہو گئے تھے

    ایک زندہ بچ جانے والے اینڈریس ایبارگین نے ریڈیو اسٹیشن لورو سٹیریو کو بتایا کہ بس ڈرائیور پہلے تو لینڈ سلائیڈنگ کے بدترین حادثے سے بچنے میں کامیاب رہا۔ اس کا کچھ حصہ نیچے آ رہا تھا اور بس اس سے تھوڑی پیچھے تھی۔ بس ڈرائیور اس وقت بیک اپ لے رہا تھا جب یہ سب گر کر تباہ ہو گیا۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Colombia
    • Share this:
      شمال مغربی کولمبیا میں موسلا دھار بارش کے سبب زلزلے کے جھٹکے محسوس کیے گئے۔ اس کی وجہ سے لینڈ سلائیڈنگ کے دوران 34 افراد ہلاک ہو گئے، وہیں ایک بس اور دیگر گاڑیاں بھی بہہ گئیں۔ اتوار کی شام لینڈ سلائیڈنگ کی وجہ سے بڑے پیمانے پر راحت کاری کا کام شروع کیا گیا۔ یہاں آباد لوگوں کو محفوظ مقامات پر منتقل ہونا کی اپیل کی گئی ہے، ساتھ ساتھ ’حفاظت خود اختیاری‘ پر بھی زور دیا گیا ہے۔ قدرتی آفات کے خطرات سے نمٹنے کی قومی یونٹ نے کہا کہ ہلاکتوں میں آٹھ نابالغ شامل ہیں اور پیئبلو ریکو کے دور دراز قصبے میں ہونے والی تباہی میں نو دیگر افراد زخمی ہوئے ہیں۔

      شہری دفاع کے حکام نے بتایا کہ بس 25 مسافروں کے ساتھ کیلی شہر سے روانہ ہوئی تھی اور اینڈیس پہاڑی علاقے سے گزرتے ہوئے لینڈ سلائیڈ کی زد میں آنے سے پہلے 270 کلومیٹر (170 میل) کا فاصلہ طے کیا۔ کولمبیا کے میڈیا نے اطلاع دی ہے کہ ایک ایسا بچہ بچ گیا ہے، جو کہ اپنی ماں کی گود میں تھا، ماں تو لینڈ سلائیڈنگ کے دوران ہلاک ہوگئی لیکن اس کے بچے کو بچا لیا گیا ہے۔

      ملک میں غیر معمولی موسمی رجحان سے منسلک شدید بارش کی وجہ سے قومی آفت کا اعلان کیا گیا ہے، یہ صورت حال دنیا بھر میں خشک سالی اور سیلاب کا باعث بن رہا ہے۔ یو این جی آر ڈی کے جیویر پاوا نے کہا کہ آج لینڈ سلائیڈنگ نے اس قصبے کو سوگ میں ڈال دیا ہے، کل یہ کسی اور علاقے میں ہو سکتا ہے، کیونکہ ہمارے ہاں واقعی ملک میں بہت سے غیر مستحکم علاقے ہیں اور بارش کا موسم ختم نہیں ہوا ہے۔

      اقوام متحدہ کی عالمی موسمیاتی تنظیم نے گزشتہ ہفتے کہا تھا کہ لا نینا کی صورتحال فروری یا مارچ 2023 تک برقرار رہ سکتی ہے۔ کولمبیا میں اس رجحان نے فصلوں کو نقصان پہنچایا، خوراک کی فراہمی میں سمجھوتہ کیا اور قیمتیں بڑھیں۔

      جولائی میں شمال مغربی کولمبیا میں تین بچے اس وقت ہلاک ہو گئے تھے جب مٹی کے تودے سے ایک دیہی اسکول سخت نقصان پہنچا تھا۔ فروری میں وسطی مغربی صوبہ رسرالدا میں شدید بارش کے باعث مٹی کے تودے گرنے سے 14 افراد ہلاک ہو گئے۔

      یہ بھی پڑھیں: 

      ایک زندہ بچ جانے والے اینڈریس ایبارگین نے ریڈیو اسٹیشن لورو سٹیریو کو بتایا کہ بس ڈرائیور پہلے تو لینڈ سلائیڈنگ کے بدترین حادثے سے بچنے میں کامیاب رہا۔ اس کا کچھ حصہ نیچے آ رہا تھا اور بس اس سے تھوڑی پیچھے تھی۔ بس ڈرائیور اس وقت بیک اپ لے رہا تھا جب یہ سب گر کر تباہ ہو گیا۔

      حکومت کے مطابق کولمبیا میں اگست میں شروع ہونے والا بارش کا موسم 40 سال میں بدترین موسم ہے، جس کی وجہ سے ایسے حادثات ہوئے جن میں 270 سے زائد افراد ہلاک ہو گئے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: