உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    واشنگٹن میں 24 جنوری تک ایمرجنسی نافذ

    ڈونلڈ ٹرمپ کی فائل فوٹو

    ڈونلڈ ٹرمپ کی فائل فوٹو

    میڈیا رپورٹس کے مطابق وفاقی تفتیشی ایجنسی (ایف بی آئی) نے جو بائیڈن کی تقریب حلف برداری 20 جنوری سے پہلے پارلیمنٹ کی عمارت ’کیپیٹل ہل‘ سمیت تمام 20 ریاستوں میں مسلح مظاہرے کے اندیشے کی بابت انتباہ جاری کیا ہے۔ اس درمیان ہوم لینڈ سکیورٹی منسٹر چاڈ وُلف نے بتایا کہ بائیڈن کی تقریب حلف برداری سے قبل واشنگٹن میں بدھ سے لاک ڈاؤن نافذ کیا جائے گا۔

    • Share this:
      واشنگٹن۔ امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ نے 20 جنوری کو نو منتخب صدر جو بائیڈن کی حلف برداری سے قبل کسی بھی نا خوشگوار واقعہ کے اندیشے کے پیش نظر دارالحکومت واشنگٹن میں 24 جنوری تک ایمرجنسی نافذ کر دی ہے۔ وائٹ ہاؤس کی جانب سے پیر کو جاری پریس ریلیز کے مطابق ڈونلڈ ٹرمپ نے 20 جنوری کو جو بائیڈن کی تقریب حلف برداری سے قبل اور اس دوران تشدد کے اندیشے کے سبب مقامی اور وفاقی افسران کی بڑھتی تشویش کے درمیان ملک کے دارالحکومت میں 11 جنوری سے 24 جنوری تک ایمرجنسی نافذ کر دی ہے۔

      میڈیا رپورٹس کے مطابق وفاقی تفتیشی ایجنسی (ایف بی آئی) نے جو بائیڈن کی تقریب حلف برداری 20 جنوری سے پہلے پارلیمنٹ کی عمارت ’کیپیٹل ہل‘ سمیت تمام 20 ریاستوں میں مسلح مظاہرے کے اندیشے کی بابت انتباہ جاری کیا ہے۔ اس درمیان ہوم لینڈ سکیورٹی منسٹر چاڈ وُلف نے بتایا کہ بائیڈن کی تقریب حلف برداری سے قبل واشنگٹن میں بدھ سے لاک ڈاؤن نافذ کیا جائے گا۔

      وُلف نے کہا،’گذشتہ ہفتے کے واقعات اور ابھرتے سکیورٹی کے منظرنامے کے بعد اور سیکریٹ سروس کے ڈائریکٹر جیمس مرے کی سفارش پر میں نے بدھ کے روز 13 جنوری سے 19 جنوری تک حلف برداری سے قبل قومی خصوصی سلامتی پروگرام شروع کرنے کی ہدایت دی ہے‘۔ انہوں نے کہا کہ اس کے لیے ہوم لینڈ سکیورٹی محکمہ سے کہا گیا ہے کہ وہ ریاست اور مقامی افسران کے ساتھ ضرورت کے مطابق کوآرڈینیشن کریں۔

      واضح رہے کہ کیپٹل ہل امریکہ میں مرکزی حکومت کی قانون ساز شاخ کے طور پر مشہور ہے۔ امریکی کانگریس کے ممبروں کے علاوہ ، سینیٹ کے ممبران اور دیگر نمائندہ عارضی ایوان بھی یہاں ہی کام کرتے ہیں۔ امریکی ایوان نمائندگان اور سینیٹ کی عمارتوں کا پورا کمپلیکس یہاں موجود ہے۔ اس کے علاوہ ، لائبریری آف کانگریس اور امریکن کیپیٹل بلڈنگ بھی یہاں واقع ہے۔ ایوان نمائندگان کی مشہور سفید گنبد عمارات اور سینیٹ کا میٹنگ چیمبر بھی یہاں موجود ہے۔ ایک طرح سے ، کیپٹل ہل کو امریکہ کے دارالحکومت واشنگٹن کی حکمرانی اور انتظامیہ کا مرکز سمجھا جاتا ہے۔ اس عمارت کو قومی اہمیت اور صدارتی انضمام کے بہت سے تہواروں کے لئے بھی استعمال کیا جاتا ہے۔ یہاں امریکی فن اور تاریخ کا ایک میوزیم موجود ہے ، جہاں ہر سال لاکھوں سیاح پہنچتے ہیں۔

      یو این آئی، اردو کے ان پٹ کے ساتھ
      Published by:Nadeem Ahmad
      First published: