ہوم » نیوز » عالمی منظر

ترکی میں پچھلے دو سال سے نافذ ایمرجنسی ختم

ترکی میں 2016 میں بغاوت کی ناکام کوشش کے بعد سے جاری ایمرجنسی کی صورت حال ختم ہو گئی ہے۔

  • Share this:
ترکی میں پچھلے دو سال سے نافذ ایمرجنسی ختم
ترکی کے صدر رجب طیب اردوغان: فائل فوٹو، فوٹو، یو این آئی۔

ترکی میں 2016 میں بغاوت کی ناکام کوشش کے بعد سے جاری ایمرجنسی کی صورت حال ختم ہو گئی ہے۔ حالانکہ حزب اختلاف کو خدشہ ہے کہ حکومت اس کی جگہ اور سخت قانون لا سکتی ہے۔


ترکی کے صدر رجب طیب اردوغان نے 20 جولائی، 2016 کو ایمرجنسی کا اعلان کیا تھا۔ اس سے پانچ دن پہلے انقرہ میں جنگی طیاروں سے بمباری کی گئی تھی اور استنبول میں پرتشدد جھڑپ بھی ہوئی تھی۔ اس میں 249 افراد ہلاک ہوئے تھے۔


عام طور پر ایمرجنسی صرف تین ماہ تک کے لئے ہی نافذ کی جاتی ہے۔ لیکن سال 2016 میں نافذ کردہ ایمرجنسی کے اب دو سال پورے ہو گئے ہیں۔ اس ایمرجنسی کو ہٹانے کی تاریخ میں سات بار توسیع کی گئی تھی۔ اس دوران تقریبا 80،000 افراد کو حراست میں لیا گیا اور تقریبا 1.5 لاکھ افراد کو سرکاری ملازمت سے برطرف کیا گیا۔


 
First published: Jul 19, 2018 10:50 AM IST