ہوم » نیوز » عالمی منظر

پرویز مشرف کے خلاف مقدمہ چلانے کی مل رہی ہے سزا: پاکستان کے سابق وزیراعظم نواز شریف نے بیان کیا درد

نا اہل قرار دیئے گئے پاکستان کے سابق وزیراعظم نواز شریف نے اکاونٹیبلٹی کورٹ میں بڑا الزام لگایا ہے۔ انہوں نے دعوی کیا ہے کہ پرویز مشرف کے خلاف معاملہ شروع کرنے کی وجہ سے ان کے خلاف بدعنوانی کے معاملے شروع کردیئے گئے۔

  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
پرویز مشرف کے خلاف مقدمہ چلانے کی مل رہی ہے سزا: پاکستان کے سابق وزیراعظم نواز شریف نے بیان کیا درد
نواز شریف: فائل فوٹو

اسلام آباد: نا اہل قرار دیئے گئے پاکستان کے سابق وزیراعظم نواز شریف نے اکاونٹیبلٹی کورٹ میں بڑا الزام لگایا ہے۔ انہوں نے دعوی کیا ہے کہ پرویز مشرف کے خلاف معاملہ شروع کرنے کی وجہ سے ان کے خلاف بدعنوانی کے معاملے شروع کردیئے گئے۔


نواز شریف نے نیشنل اکاونٹیبلٹی بیورو کے خلاف کاونٹیبلٹی کورٹ میں کہا کہ فوجی تاناشاہ پرویز مشرف کے خلاف ملک سے غداری کا معاملہ شروع کرنے کے سبب ان کے خلاف بدعنوانی کے الزامات عائد کئے گئے۔ انہوں نے کہا کہ ملک سے غداری کا معاملہ شروع کرنے کے سبب انہیں یہ سزا مل رہی ہے۔


نواز شریف اور ان کے اہل خانہ کو 28 جولائی 2017 پناما پیپر کے فیصلے میں سپریم کورٹ کے حکم کے تحت این اے بی کے ذریعہ دائر ایوین فیلڈ پراپرٹیز العزیزیہ اسٹیل ملس اور فلیگ شپ انوسٹمنٹ کمپنی سے متعلقہ تین معاملوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ پاکستان کے انگریزی اخبار ڈان کے مطابق پاکستان مسلم لیگ کے سربراہ نواز شریف سے کہا گیا ہے کہ کرمنل پروسیزر کوڈ کی دفعہ 342 کے تحت ایوین فیلڈ معاملوں میں اپنا آخری بیان درج کرائیں۔


جب نواز شریف سے یہ پوچھا گیا کہ ایوین فیلڈ کا معاملہ ان کے خلاف کیوں درج کرایا گیا تو انہوں نے کہا کہ مشرف کے خلاف معاملہ شروع کرنے کے لئے وارننگ دی گئی تھی۔

انہوں نے دعویٰ کیا کہ ایک انٹلی جنس کے ہیڈ نے ان سے کہا تھا کہ استعفیٰ دیں یا طویل چھٹی پر چلے جائیں۔ نواز نے یہ بھی کہا کہ ایسی دھمکیاں کسی ایجنسی کے سربراہ کی طرف سے قومی صدر کو کسی تیسری دنیا کے ملک میں بھی نہیں دی جاتی۔ انہوں نے اشارہ کیا کہ تحریک انصاف اور پاکستان عوامی تحریک دونوں ان کے خلاف سازش کرررہے ہیں۔

نواز شریف نے کہا کہ ملک سے غداری کا معاملہ درج ہونے سے قبل میں عمران خان سے ملا تھا اور انہوں نے کبھی استعفیٰ کا مطالبہ نہیں کیا، لیکن پرویز مشرف کے کلاف معاملہ درج ہونے کے بعد حیرانی کی بات ہے، وہ لندن میں طاہرالقادری سے ملے، جہاں انہوں نے میری حکومت کے خلاف بیٹھنے کا فیصلہ کیا۔ نواز شریف نے مسلح افواج کی قربانیوں کی سراہنا کی۔ انہوں نے کہا کہ مسلح افواج کو کسی ایک کی غلطی کی وجہ سے تمام اداروں کو اس ک قیمت چکانی ہوتی ہے۔

 

 

 
First published: May 23, 2018 08:59 PM IST