உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    عمران خان کو سبق سکھانے کے لئے پاکستانی فوج کا بڑا قدم، سابق وزیر اعظم نواز شریف کا استقبال کرنے کےلئے تیار

    پاکستانی فوج سابق وزیر اعظم نواز شریف کا استقبال کرنے کے لئے تیار

    پاکستانی فوج سابق وزیر اعظم نواز شریف کا استقبال کرنے کے لئے تیار

    نواز شریف پاکستان میں بدعنوانی کے دو معاملوں میں قصور وار قرار دیئے گئے تھے۔ ایک تھا ایون فیلڈ پراپرٹی معاملہ اور دوسرا تھا العزیزیہ ملس کیس۔ انہیں دسمبر 2019 میں اسلام آباد ہائی کورٹ نے قصور وار ٹھہرایا تھا۔ وہ عدالت کے سامنے پیش نہیں ہوئے تھے۔

    • Share this:
      اسلام آباد: پاکستان (Pakistan) کے وزیر اعظم عمران خان (Imran Khan) کی مشکلات میں مزید اضافہ ہوگیا ہے۔ ایسا اس لئے کیونکہ پاکستانی فوج نے سابق وزیر اعظم نواز شریف (Nawaz Sharif) کو ملک لوٹنے کا اشارہ دے دیا ہے۔ CNN-News18 کو ذرائع نے جانکاری دی ہے کہ نواز شریف سے کہا گیا ہے کہ پاکستان کو آپ کی ضرورت ہے۔ ان کو واپس آنا چاہئے۔ ایسا پاکستان کی فوج اور وزیر اعظم عمران خان کے درمیان چل رہی تکرار کے سبب ہوا۔ اس کے تحت اب نواز شریف کو بلاکر عمران خان کو باہر کا راستہ دکھانے کی تیاری ہے۔

      نواز شریف بدعنوانی معاملے میں قصوروار

      نواز شریف پاکستان میں بدعنوانی کے دو معاملوں میں قصور وار قرار دیئے گئے تھے۔ ایک تھا ایون فیلڈ پراپرٹی معاملہ اور دوسرا تھا العزیزیہ ملس کیس۔ انہیں دسمبر 2019 میں اسلام آباد ہائی کورٹ نے قصور وار ٹھہرایا تھا۔ وہ عدالت کے سامنے پیش نہیں ہوئے تھے۔ عدالت نے نواز شریف کو آمدنی سے زیادہ جائیداد بنانے اور آمدنی کے ذرائع کے معلوم نہ ہونے کے سبب 10 سال کی سزا سنائی تھی۔ جبکہ ایون فیلڈ کیس میں جانچ میں تعاون نہ کرنے پر ایک سال کی سزا سنائی گئی تھی۔

      پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان کی مشکلات میں مزید اضافہ ہوگیا ہے۔
      پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان کی مشکلات میں مزید اضافہ ہوگیا ہے۔


      اسی سال نواز شریف کو العزیزیہ اسٹیل ملس بدعنوانی معاملہ میں بھی سات سال کی سزا سنائی گئی تھی۔ ملس میں غیر قانونی سرمایہ کاری پائی گئی تھی۔ سزا ایک ساتھ چلتی رہیں۔ اب نواز شریف لندن میں رہ رہے ہیں۔ انہیں نومبر 2019 کو لاہور ہائی کورٹ نے علاج کے لئے چار ہفتے کے لئے جانے کی راحت دی تھی۔

      یہ بھی پڑھیں۔

      پاکستانی فوج سے ناراضگی عمران خان ’ذلت‘ کا سبب، وزیر اعظم عہدے سے چھٹی طے




      نواز شریف کو العزیزیہ اسٹیل ملس بدعنوانی معاملہ میں بھی اسی سال 7 سال کی سزا سنائی گئی تھی۔
      نواز شریف کو العزیزیہ اسٹیل ملس بدعنوانی معاملہ میں بھی اسی سال
      7 سال کی سزا سنائی گئی تھی۔


      اب موجودہ تنازعہ کے درمیان گلگت بالستان کے چیف جسٹس رانا ایم شمیم نے ایک حلف نامہ داخل کرکے دعویٰ کیا ہے کہ اس وقت کے سی جے پی ثاقب نثار نے ہائی کورٹ کے جج کو حکم دیا تھا کہ نواز شریف اور ان کی بیٹی مریم نواز 2018 عام انتخابات سے قبل ضمانت پر نہیں چھوٹنے چاہئے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ یہ حلف نامہ پاکستانی فوج کی اجازت لے کر ہی داخل کیا گیا ہے۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: