اپنا ضلع منتخب کریں۔

    پاکستان رچ رہا پھر سازش، دہشت گرد تنظیموں کے ساتھ جموں و کشمیر میں دراندازی کا بنایا ناپاک منصوبہ

    گزشتہ چند مہینوں کے دوران کشمیر میں کنٹرول لائن کے ساتھ سیکٹروں میں دہشت گردوں کی دراندازی کے واقعات میں اضافہ ہوا ہے، جس سے سیکورٹی فورسز اور عام شہریوں پر آئی ای ڈی اور فدائین حملوں کا خطرہ بڑھ گیا ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • inter, IndiaPakistanPakistanPakistanPakistan
    • Share this:
      پاکستانی خفیہ ایجنسی آئی ایس آئی کی جانب سے ہندوستان میں دوبارہ دہشت گردانہ کارروائیاں کرنے کی سازش رچی جا رہی ہے۔ تازہ ترین انٹیلی جنس رپورٹ کے مطابق، آئی ایس آئی نے لائن آف کنٹرول (ایل او سی) کے قریب دہشت گردوں کے ہینڈلرز اور بارڈر گائیڈز کے ساتھ میٹنگ کی ہے۔ نیوز 18 کے پاس اس خفیہ رپورٹ کی کاپی موجود ہے۔ اس میٹنگ میں زیادہ سے زیادہ دہشت گردوں کو ہندوستانی سرحد میں گھسنے کا کہا گیا ہے۔ گزشتہ چند مہینوں کے دوران کشمیر میں کنٹرول لائن کے ساتھ سیکٹروں میں دہشت گردوں کی دراندازی کے واقعات میں اضافہ ہوا ہے، جس سے سیکورٹی فورسز اور عام شہریوں پر آئی ای ڈی اور فدائین حملوں کا خطرہ بڑھ گیا ہے۔

      پاکستان میں جاری موجودہ صورتحال کے پیش نظر آئی ایس آئی نے ایک بار پھر وہاں کے لوگوں کی توجہ ہٹانے کی نئی سازش رچی ہے۔ اس کے تحت پاکستانی خفیہ ایجنسی کے اہلکاروں نے جموں و کشمیر میں بڑے پیمانے پر دہشت گردی کے واقعات کو انجام دینے کا منصوبہ بنایا ہے۔ دہشت گردوں سے کہا گیا ہے کہ وہ گولہ بارود کے ساتھ ہندوستانی حدود میں گھس جائیں۔ انٹیلی جنس ایجنسیوں کی رپورٹ کے مطابق آئی ایس آئی کے افسر آصف نے لائن آف کنٹرول کے پار ڈیری دیواسی گاؤں میں پاکستانی بارڈر گائیڈز اور دہشت گردوں کے ہینڈلرز کی میٹنگ کی جس میں زیادہ سے زیادہ دہشت گردوں کو ہندوستانی سرحد پر بھیجنے کو کہا گیا۔ پاکستان کی کوشش ہے کہ جموں و کشمیر میں امن کو خراب کرنے اور آئندہ اسمبلی انتخابات میں رکاوٹ ڈالنا ہے۔

      وراٹ کوہلی کی فارم کودیکھ کر گھبرائے پاکستان کے سابق کپتان، ٹیم انڈیا کیلئے دیا اچھا اشارہ

      ساتھ ہی بتادیں کہ آئی ایس آئی کے ذریعے پاکستان کا مقصد مقامی لوگوں میں خوف کی فضا پیدا کرنا ہے۔ خیال رہے کہ حکومت ہند چاہتی ہے کہ جموں و کشمیر میں جلد از جلد اسمبلی انتخابات کرائے جائیں، تاکہ وہاں کے عوام کو منتخب حکومت مل سکے۔ پاکستان نہیں چاہتا کہ جموں و کشمیر کا جمہوری عمل آگے بڑھے اور جموں و کشمیر کے عوام اس میں شامل ہوں۔ یہی وجہ ہے کہ اس نے ایک بار پھر بڑی سازش رچی ہے۔ 2021 کے مقابلے اس سال کشمیر کے 7 سیکٹروں میں دہشت گردوں کی دراندازی میں اضافہ ہوا ہے۔ رپورٹ کے مطابق اگست 2021 تک گریز سیکٹر میں دراندازی کی 15 وارداتیں ہوئیں جبکہ اس سال یہ تعداد بڑھ کر 19 ہو گئی ہے۔

      پاکستان شرمناک ہار کے باوجود بنا سکتا ہے سیمی فائنل میں جگہ، جانئے کیسے

      اس میں لشکر طیبہ اور جیش محمد کے دہشت گرد شامل ہیں۔ کیرن سیکٹر میں 2021 میں صرف 9 دراندازی ہوئی تھیں، جبکہ اس سال اگست تک 18 دراندازی ہوئی ہے اور اس میں تمام دراندازی لشکر طیبہ کے دہشت گردوں کی ہے۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ مچھل سیکٹر میں 5 کے بجائے 14، تنگدھار سیکٹر میں 15 سے 16، اڑی میں 17 سے 20 تک دہشت گردوں کی دراندازی کے واقعات درج ہوئے ہیں۔ ان میں سے زیادہ تر دراندازی کی کوششیں لشکر اور جیش کے دہشت گردوں نے کی ہیں۔ اس لیے فدائین کے حملے کا خطرہ بڑھ گیا ہے۔ انٹیلی جنس اداروں کی رپورٹس کی بنیاد پر سکیورٹی فورسز نے پاکستان کی سازش کا منہ توڑ جواب دینے کی تیاریاں شروع کردی ہیں۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: