உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    F35-C لڑاکا طیارہ کا کیا ہے معمہ؟ بحیرہ جنوبی چین میں ڈوبے امریکی طیارے تک پہنچنے کی دوڑ جاری

    فائل فوٹو

    فائل فوٹو

    یہ بحریہ کا جدید ترین طیارہ ہے اور اس میں درجہ بند سامان موجود ہے۔ اس کے ذریعہ بین الاقوامی سمندروں میں بآسانی سفر کیا جاسکتا ہے، لیکن یہ ایک تکنیکی طور پر منصفانہ کھیل بھی ہے۔ جو وہاں پہلے پہنچتا ہے، وہ جیت جاتا ہے۔ اس انتہائی مہنگی، سرکردہ فائٹنگ فورس کے پیچھے تمام راز پوشیدہ ہیں۔

    • Share this:
      امریکی بحریہ کے لیے اپنے گرائے گئے لڑاکا طیاروں میں سے ایک تک پہنچنے کے لیے وقت کے خلاف ایک دوڑ جاری ہے کہ سب سے پہلے کہ چین وہاں پہنچ نہ جائے۔ اطلاع کے مطابق 74 پونڈ ملین (سو ملین ڈالر) کا F35-C نامی طیارہ بحیرہ جنوبی چین میں اس وقت گرا جب بحریہ نے یو ایس ایس کارل ونسن سے ٹیک آف کے دوران حادثہ قرار دیا ہے۔

      یہ بحریہ کا جدید ترین طیارہ ہے اور اس میں درجہ بند سامان موجود ہے۔ اس کے ذریعہ بین الاقوامی سمندروں میں بآسانی سفر کیا جاسکتا ہے، لیکن یہ ایک تکنیکی طور پر منصفانہ کھیل بھی ہے۔ جو وہاں پہلے پہنچتا ہے، وہ جیت جاتا ہے۔ اس انتہائی مہنگی، سرکردہ فائٹنگ فورس کے پیچھے تمام راز پوشیدہ ہیں۔

      یہ اب سمندر کے بستر پر پڑا ہے، لیکن اس کے بعد کیا ہوتا ہے یہ ایک معمہ ہے۔ بحریہ اس بات کی تصدیق نہیں کرے گی کہ یہ کہاں سے نیچے آیا یا اسے بازیافت کرنے میں کتنا وقت لگے گا۔ چین تقریباً پورے جنوبی بحیرہ چین پر دعویٰ کرتا ہے اور حالیہ برسوں میں اس دعوے پر زور دینے کے لیے تیزی سے اقدامات کیے ہیں۔ سال 2016 کے بین الاقوامی ٹریبونل کے فیصلے کو تسلیم کرنے سے انکار کرتے ہوئے کہا کہ اس کی کوئی قانونی بنیاد نہیں ہے۔

      قومی سلامتی کے ماہرین کا کہنا ہے کہ چینی فوج جیٹ تک پہنچنے کے لیے بہت خواہش مند ہوگی لیکن ایسا لگتا ہے کہ امریکی بچاؤ کا جہاز جائے حادثہ سے کم از کم 10 دن کے فاصلے پر ہے۔ دفاعی مشیر ابی آسٹن کا کہنا ہے کہ ابھی بہت دیر ہو چکی ہے، کیونکہ بلیک باکس کی بیٹری اس سے پہلے ہی ختم ہو جائے گی۔ جس سے طیارے کا پتہ لگانا مشکل ہو جائے گا۔ یہ بہت اہم ہے کہ امریکہ اسے واپس لے۔ F-35 بنیادی طور پر ایک اڑنے والے کمپیوٹر کی طرح ہے۔ اسے دوسرے اثاثوں کو جوڑنے کے لیے ڈیزائن کیا گیا ہے - جسے فضائیہ 'لنکنگ سینسر ٹو شوٹرز' کہتی ہے۔

      فضائیہ کے ماہرین کا کہنا ہے کہ چین کے پاس وہ ٹیکنالوجی نہیں ہے اس لیے اس پر ہاتھ ڈالنے سے وہ بہت بڑی چھلانگ لگا دے گی۔ اگر وہ 35 کی نیٹ ورکنگ کی صلاحیتوں میں داخل ہوسکتے ہیں، تو یہ پورے کیریئر کے فلسفے کو مؤثر طریقے سے کمزور کر دیتا ہے۔

      پیر کو فوجی مشق کے دوران ونسن کے ڈیک سے ٹکرانے کے بعد جیٹ کے نیچے آنے سے سات ملاح زخمی ہو گئے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: