உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Facebook-Snapchat نہیں TikTok ہے سوشل میڈیا کا فیوچر، زکربرگ نے بھی کیا اعتراف!

    ۔علامتی تصویر۔

    ۔علامتی تصویر۔

    پہلے ایسے لگا تھا کہ لاک ڈاون اور وبا پہلے سے کم ہونے کے بعد لوگوں کی زندگی معمول پر آجائے گی اور اسٹوریز میں اُچھال دیکھنے کو ملے گا، حالانکہ ایسا نہیں ہوا۔ اس کے بدلے اسنیپ چیٹ پر لوگ زیادہ ویڈیوز دیکھنے لگے۔

    • Share this:
      نئی دہلی:ٹک ٹاک کی وجہ سے فیس بک کو بہت زیادہ نقصان ہو رہا ہے۔ بھلے ہی ہندوستان میں TikTok پر پابندی ہے، لیکن یہ امریکہ میں بہت تیزی سے پھل پھول رہا ہے۔ لوگ فیس بک چھوڑ کر TikTok پر زیادہ وقت گزار رہے ہیں۔

      ایسے میں فیس بک اور اسنیپ چیٹ کو لگتا ہے کہ سوشل میڈیا کا فیوچر ٹک ٹاک جیا ہی ہوگا۔ غورطلب ہے کہ فیس بک ہمیشہ سے ہی دوسرے ایپس کے فیچرکاپی کرتا آیا ہے۔ ٹک ٹاک کے آنے کے بعد فیس بک نے اس سے ملتے جلتے کئی فیچرس لانچ کیے ہیں۔

      ٹک ٹاک جیسی ریلز فیچر بھی انسٹاگرام پر لایا گیا ہے۔ فیس بک ایپ میں شارٹ ویڈیوز کا رجحان بھی تیزی سے بڑھ رہا ہے۔ دی ورج کی ایک رپورٹ کے مطابق اسنیپ چیٹ کے سی ای او ایون اسپیگل نے کہا ہے کہ ایپ میں موجود لوگ دوستوں کی اسٹوریز دیکھنے میں کم وقت گزار رہے ہیں۔

      آپ کو بتاتے چلیں کہ سنیپ چیٹ نے سب سے پہلے کہانی کا فارمیٹ متعارف کرایا تھا۔ اس کے تحت تصاویر اور ویڈیوز شیئر کی جاتی ہیں اور بعد میں غائب ہوجاتی ہیں۔ اسنیپ چیٹ کے اس فیچر کو میٹا نے واٹس ایپ، فیس بک ایپ اور انسٹاگرام کے لیے کاپی کیا تھا۔ کہا جا سکتا ہے کہ متاثر ہو کر فیس بک نے یہ فیچر اپنے لیے تیار کیا ہے۔

      آپ کو بتادیں کہ اسنیپ چیٹ نے سب سے پہلے اسٹوری کا فارمیٹ متعارف کرایا تھا۔ اس کے تحت تصاویر اور ویڈیوز شیئر کی جاتی ہیں اور بعد میں غائب ہوجاتی ہیں۔ اسنیپ چیٹ کے اس فیچر کو میٹا نے واٹس ایپ، فیس بک ایپ اور انسٹاگرام کے لیے کاپی کیا تھا۔ کہا جا سکتا ہے کہ متاثر ہو کر فیس بک نے یہ فیچر اپنے لیے تیار کرلیا ہے۔

      انہوں نے کہا کہ پہلے ایسے لگا تھا کہ لاک ڈاون اور وبا پہلے سے کم ہونے کے بعد لوگوں کی زندگی معمول پر آجائے گی اور اسٹوریز میں اُچھال دیکھنے کو ملے گا، حالانکہ ایسا نہیں ہوا۔ اس کے بدلے اسنیپ چیٹ پر لوگ زیادہ ویڈیوز دیکھنے لگے۔

      بتادیں کہ TikTok جیسا شارٹ ویڈیو فیچر Snapchat میں بھی ہے جسے Spotlight کہا جاتا ہے۔ یہاں وائرل ویڈیوز پوسٹ کیے جاتے ہیں۔ یہاں پریمیم شوز کا بھی سیشکن ہے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: