ہوم » نیوز » عالمی منظر

Facebook on Covid-19:فیس بک کووڈ-19 سے متعلق پوسٹ کو نہیں ہٹائے گا: ترجمان

فیس بک کے ترجمان نے بدھ کے روز کورونا وائرس کے بارے میں غلط فہمی کے حوالے سے کہا کہ کووڈ -19 کی اصلیت کی موجودہ جانچ اور ماہرین صحت سے مشاورت کے بعد اب ہم نے اپنے پلیٹ فارم سے اس پوسٹ کو نہ ہٹانے کا فیصلہ کیا ہے

  • Share this:
Facebook on Covid-19:فیس بک کووڈ-19 سے متعلق پوسٹ کو نہیں ہٹائے گا: ترجمان
علامتی تصویر

فیس بک کے ترجمان نے کہا ہے کہ سوشل نیٹ ورک پر کورونا وائرس (کووڈ-19) کے جینسیس کی جانچ اور صحت عامہ کے ماہرین سے مشورہ کرنے کے بعد کمپنی نے اپنے پلیٹ فارم سے ان پوسٹوں کو نہ ہٹانے کا فیصلہ کیا جن میں کہا گیا ہے کہ کورونا وائرس کو مصنوعی طریقے سے پیدا کیا گياہے۔یہ اعلان میں وال اسٹریٹ جرنل میں اتوار کے روز اس مضمون کے شائع ہونے کے بعد کیا گيا ہے، جس میں امریکی خفیہ ایجنسی کے حوالے سے بتایا گيا تھا کہ چین کے ووہان انسٹی ٹیوٹ آف ویرولوجی کے تین تحقیقاتکار نومبر میں بیمار ہوگئے تھے۔ چینی وزارت خارجہ نے وال اسٹریٹ جرنل کی رپورٹ کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس رپورٹ میں کوئی سچائی نہیں ہے۔ امریکی صدر جو بائیڈن نے بدھ کے روز اس کورونا وائرس کی اصلیت کا خفیہ جائزہ لینے کا حکم دیا ہے۔


ملک میں کورونا سے متاثرہ مریضوں کا گراف تیزی سے نیچے جارہا ہے
ملک میں کورونا سے متاثرہ مریضوں کا گراف تیزی سے نیچے جارہا ہے


فیس بک کے ترجمان نے بدھ کے روز کورونا وائرس کے بارے میں غلط فہمی کے حوالے سے کہا کہ کووڈ -19 کی اصلیت کی موجودہ جانچ اور ماہرین صحت سے مشاورت کے بعد اب ہم نے اپنے پلیٹ فارم سے اس پوسٹ کو نہ ہٹانے کا فیصلہ کیا ہے، جس میں کہا گيا ہے کہ کورونا وائرس انسانی ساختہ ہے۔قابل ذکر ہے کہ کورونا وائرس کا پہلا واقعہ دسمبر 2019 میں وسطی چین کے صوبہ ہوبئی میں واقع ووہان شہرمیں سامنے آیا تھا۔



ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن (ڈبلیو ایچ او)نے بعدازاں اس خطے میں حقائق تلاش کرنے کے مشن کا آغاز کیا اور مارچ میں ایک رپورٹ جاری کی جس میں یہ نتیجہ اخذ کیا گیا کہ اس طرح کے وائرس کے لیبارٹری سے باہر آنے کا امکان بہت کم ہے۔ عالمی ادارہ صحت کے ماہرین نے یہ نتیجہ اخذ کیا ہے کہ یہ وائرس چمگادڑوں سے کسی جانور میں منتقل ہوکر انسانوں میں پھیل گیا ہے۔
Published by: Mirzaghani Baig
First published: May 27, 2021 09:12 PM IST