உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    FATF کی پیرس میں آج میٹنگ، گرے لسٹ سے ہٹے گا پاکستان یا نہیں؟ آج ہوگا بڑا فیصلہ

    ایف اے ٹی ایف (FATF) کی منی لانڈرنگ اور دہشت گردی کی مالی معاونت کی نگرانی کے لئے مکمل اجلاس 22 فروری یعنی آج سے شروع ہونے والا ہے۔ ایف اے ٹی ایف کے ورکنگ گروپ کی میٹنگ 4 مارچ تک جاری رہیں گی۔

    ایف اے ٹی ایف (FATF) کی منی لانڈرنگ اور دہشت گردی کی مالی معاونت کی نگرانی کے لئے مکمل اجلاس 22 فروری یعنی آج سے شروع ہونے والا ہے۔ ایف اے ٹی ایف کے ورکنگ گروپ کی میٹنگ 4 مارچ تک جاری رہیں گی۔

    ایف اے ٹی ایف (FATF) کی منی لانڈرنگ اور دہشت گردی کی مالی معاونت کی نگرانی کے لئے مکمل اجلاس 22 فروری یعنی آج سے شروع ہونے والا ہے۔ ایف اے ٹی ایف کے ورکنگ گروپ کی میٹنگ 4 مارچ تک جاری رہیں گی۔

    • Share this:
      نئی دہلی: ایف اے ٹی ایف (FATF) کی منی لانڈرنگ اور دہشت گردی کی مالی معاونت کی نگرانی کے لئے مکمل اجلاس 22 فروری یعنی آج سے شروع ہونے والا ہے۔ پیر کو شروع ہونے والے اجلاس میں اقوام متحدہ کی طرف سے نامزد دہشت گرد گروپوں کے خلاف پاکستان (Pakistan) کے ذریعہ اٹھائے گئے اقدامات اور کوششوں کا جائزہ لیا جائے گا۔ اس کے بعد ہی ایف اے ٹی ایف اس بات کا فیصلہ لے گا کہ پاکستان کو گرے لسٹ سے باہر کیا جانا ہے یا نہیں۔

      ایف اے ٹی ایف کے ورکنگ گروپ کی میٹنگ 4 مارچ تک جاری رہیں گی۔ پیرس واقع مالیاتی افرادی قوت (ایف ے ٹی ایف) نے جون 2018 میں پاکستان کو ’گرے لسٹ‘ میں رکھا تھا اور اسلام آباد کو 2019 کے آخر تک منی لانڈرنگ اور دہشت گردی کی مالی معاونت پر لگام لگانے کے لئے کام کرنے کا منصوبہ نافذ کرنے کے لئے کہا تھا، لیکن بعد میں کووڈ-19 وبا کے سبب یہ مدت بڑھا دی گئی تھی۔

      گزشتہ سال اکتوبر میں اپنی آخری مکمل میٹنگ کے بعد، دہشت گردی کی پرورش پر نظر رکھنے والی تنظیم نے پاکستان سے اقوام متحدہ کی فہرست میں شامل دہشت گردانہ گروپوں کے سینئر لیڈران اور کمانڈروں کی جانچ کرنے اور ان پر مقدمہ چلانے کے لئے کہا تھا۔ ایف اے ٹی ایف کے صدر مارکس پلیئر نے اس وقت کہا تھا کہ پاکستان نے دہشت گردی کے خلاف کئی اہم اقدامات اٹھائے ہیں، لیکن آگے یہ دکھانے کی ضرورت ہے کہ اقوام متحدہ کی طرف سے نامزد دہشت گرد گروپوں کے سینئر رہنماؤں سے تفتیش اور ان کے خلاف قانونی کارروائی کی جا رہی ہے۔

      اس درمیان ماہرین کا ماننا ہے کہ پاکستان کو ابھی بھی گرے لسٹ میں رکھا جاسکتا ہے، لیکن اسے بلیک لسٹ میں شامل کئے جانے کا امکان کافی کم ہے۔ اگر پاکستان کو بلیک لسٹ میں شامل کیا جاتا ہے تو اس کے لئے سخت اقتصادی پابندی، مالی اور بینکنگ لین دین کی جانچ کی ضرورت ہوگی۔ واضح رہے کہ اس وقت فی الحال شمالی کوریا اور ایران دو ملک ہی بلیک لسٹ میں شامل ہیں۔

       
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: