امریکہ کے سینٹ لوئس میں پولس نے پھر سیاہ فام نوجوان کو ماری گولی

امریکہ میں ایک مرتبہ پھر ایک سیاہ فام نوجوان کو پولس کے گولی مارنے کا معاملہ سامنے آیا ہے۔

Aug 20, 2015 08:24 PM IST | Updated on: Aug 20, 2015 08:24 PM IST
امریکہ کے سینٹ لوئس میں پولس نے پھر سیاہ فام نوجوان کو ماری گولی

واشنگٹن : امریکہ میں ایک مرتبہ پھر ایک سیاہ فام نوجوان کو پولس کے گولی مارنے کا معاملہ سامنے آیا ہے۔ مشوری ریاست کے سینٹ لوئس میں دو پولس اہلکاروں پر پستول تاننے کے الزام میں سیاہ فام منصور بالبے کو کل گولی مار کر ہلاک کردیا۔سینٹ لوئس کاؤنٹی کے پولس سربراہ سیم ڈائسن نے ایک پریس کانفرنس میں کہا کہ ہاتھوں میں ہتھیار لئے دو مشکوک نوجوان ایک مکان کے پیچھے سے نکل کر بھاگے اور دو پولس والوں نے ان کا تعاقب کیا۔ پیچھا کرنے کے دوران ان دو نوجوانوں میں ایک نے پولس والوں پر پستول تان دی۔

اس پر پولس والوں نے ان پر گولی چلادی۔ اس فائرنگ میں ایک نوجوان کی موت ہوگئی اور دوسرا زخمی ہوگیا لیکن زخمی نوجوان فرار ہوگیا۔ اس فائرنگ کے تبادلے میں پولس والوں میں سے کوئی زخمی نہیں ہوا۔ دونوں اہلکار فی الحال چھٹی پر ہیں۔مشوری ریاست کے سینٹ لوئس علاقہ میں 9 اگست 2014 کو ایک گورے پولس والے نے نہتے سیاہ فام نوجوان مائیکل براؤں کو گولی مار دی تھی۔ اس واقعہ کے بعد نہ صرف ریاست بلکہ پورے ملک میں سیاہ فام نے زبردست احتجاجی مظاہرے کئے تھے۔

اس واقعہ کے ایک سال مکمل ہونے پر حال ہی میں ریاست میں ایک مرتبہ پھر زبردست مظاہروں کا دور شروع ہوا تھا۔ ان مظاہروں کے محض دس روز بعد ہی کل ہوئے اس واقعہ میں ایک مرتبہ پھر سیاہ فام نوجوان پولس کی فائرنگ کا شکار ہوا ہے۔

Loading...

Loading...