ہوم » نیوز » عالمی منظر

پاکستان میں بچوں کونہیں مل رہاہے تغذیہ سے بھرپورکھانا،وزیراعظم عمران خان کا اعتراف

عمران کا کہنا ہے کہ فوڈ سکیورٹی در حقیقت قومی سلامتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت نے اس سلسلے میں ایک آرڈر بھی جاری کیا ہے ، جس کے تحت پہلی بار احسان پروگرام میں تغذیہ سے متعلق کام لایا جائے گا۔عمران خان نے خالص دودھ کی دستیابی پر کہا کہ یہ مسئلہ بچوں کی نشوونما میں بھی بہت اہم ہے۔

  • Share this:
پاکستان میں بچوں کونہیں مل رہاہے تغذیہ سے بھرپورکھانا،وزیراعظم عمران خان کا اعتراف
پاکستان میں بچوں کو نہیں مل رہا ہےغذائیت سے بھرپور کھانا

اسلام آباد: جمعرات کو پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان نے فوڈ سکیورٹی کو پاکستان کے لیےدرپیش سب سے بڑے چیلنج میں سے ایک قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ ملک کو مستقبل میں غذائی قلت سے اپنی آبادی کو بچانے کے لئے اقدامات اٹھانا ہوگا۔ پاکستانی اخبار ڈان کے مطابق ، اسلام آباد میں کسانوں کے کنونشن سے خطاب کے دوران ، عمران خان کا کہنا تھا کہ پاکستان نے گذشتہ سال 40 لاکھ ٹن گندم درآمد کی تھی جس کی وجہ سے ایک ہی جھٹکے میں ملک کے زرمبادلہ کے ذخائر میں لاکھوں ڈالر کی کمی واقع ہوئی ہے۔


عمران خان نے کہا کہ پاکستان کا نیا اور بڑا چیلنج فوڈ سکیورٹی ہے۔وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ اس بارے میں بھی تیاریاں کی جارہی ہیں کہ تیزی سے بڑھتی آبادی کے لئے آئندہ 5۔15 سالوں میں پاکستان زراعی پیداوار میں کس طرح اضافہ کیا جائے۔ پاکستانی وزیر اعظم نے یہ بھی نوٹ کیا کہ ملک کے 40 فیصد بچے مناسب تغذیہ کی محرومی سے متاثر ہیں اوران بچوں کی نشوونما بھی متاثرہوکررہ گئی ہے۔



بچوں کو نہیں مل رہا ہےغذائیت سے بھرپور کھانا

عمران کا کہنا ہے کہ فوڈ سکیورٹی در حقیقت قومی سلامتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت نے اس سلسلے میں ایک آرڈر بھی جاری کیا ہے ، جس کے تحت پہلی بار احسان پروگرام میں تغذیہ سے متعلق کام لایا جائے گا۔عمران خان نے خالص دودھ کی دستیابی پر کہا کہ یہ مسئلہ بچوں کی نشوونما میں بھی بہت اہم ہے۔ خان نے کہا کہ انہیں بچوں کی نشوونما کے لئے خالص شکل میں اچھی چیزیں نہیں مل رہی ہیں۔ عمران نے اس کے لئے پاکستان کے 'Elite Capture' کو بھی مورد الزام ٹھہرایا۔ 'Elite Capture' کا مطلب ہے خصوصیات اور وسائل پر امیر افراد کا اثر رو رسوخ ہے


عمران نے کہا کہ یہ ملک چند لوگوں کے لئے نہیں بنایا گیا تھا جبکہ ایک چھوٹا طبقہ تمام وسائل پر قابض ہے اور کوئی بھی اسے تبدیل کرنے کے لئے تیار نہیں ہے۔عمران نے کہا کہ اگر کوئی قوم اپنے لوگوں کو صحیح کھانا مہیا نہیں کرسکتی ہے تو وہ کبھی ترقی نہیں کرسکتی۔ خان نے کہا کہ اگر 15۔40 سال کی عمر کی آبادی بھوک رہتی ہے تو وہ ملک کو نیچے لے جائیں گے اور انہیں بھی ایسا کرنا چاہئے۔ خان نے کہا کہ اگر قوم انہیں صحیح غذا نہیں دے سکتی ہے تو اسے سزا ضرور ملنی چاہئے۔
Published by: Mirzaghani Baig
First published: Jul 02, 2021 07:39 AM IST