انڈونیشیا میں مذہب اسلام کی توہین کے ملزم سابق گورنر اپنی اپیل واپس لیں گے

جکارتہ۔ انڈونیشیا کے دارالحکومت جکارتہ کے سابق عیسائی گورنر باسوکی جہازا پرناما مذہب اسلام کی توہین کرنے کے معاملے میں دو سال کی قید کی سزا کے خلاف کی گئی اپنی اپیل واپس لیں گے۔

May 23, 2017 12:01 PM IST | Updated on: May 23, 2017 12:02 PM IST
انڈونیشیا میں مذہب اسلام کی توہین کے ملزم سابق گورنر اپنی اپیل واپس لیں گے

جکارتہ کے پہلے غیر مسلم گورنر پورناما جکارتہ کی ایک عدالت میں فیصلہ سننے کے لئے، تصویر: رائٹرز، فائل فوٹو

جکارتہ۔ انڈونیشیا کے دارالحکومت جکارتہ کے سابق عیسائی گورنر باسوکی جہازا پرناما مذہب اسلام کی توہین کرنے کے معاملے میں دو سال کی قید کی سزا کے خلاف کی گئی اپنی اپیل واپس لیں گے۔ مسٹر پرناما کی چھوٹی بہن فیفی لیٹی اندرا اور ان کے وکیلوں نے ایک پریس کانفرنس میں بتایا کہ سابق گورنر سزا کے خلاف کی گئی اپنی اپیل واپس لیں گے۔

قابل ذکر ہے کہ’ اہوک‘ کے نام سے مشہورمسٹر پرناما کو نو مئی کومذہب اسلام کی توہین کے مقدمے میں قصوروار پائے جانے کے بعد دو سال قید کی سزا سنائی گئی تھی۔ تنازعات میں گھرے عیسائی لیڈر پر اپنے عہدے پر برقرار رہنے کےلئے تشہیر کے دوران مذہب اسلام کی مذمت کرنے کے الزام میں دسمبر میں مقدمہ شروع کیا گیا تھا۔ اہوک نے ان الزامات کی تردید کی تھی۔

Loading...

Loading...