ہوم » نیوز » عالمی منظر

فرانس: 72 گھنٹے میں دوسرا حملہ، چرچ کے گیٹ پر پادری کو گولی ماری، حملہ آور فرار

Second Attack in sewenty Two Hours in France: فرانس کے لیون شہر میں چرچ کے پاس کے ایک پادری کو گولی مارکر حملہ آور فرار ہوگیا۔ پادری کی عمر تقریباً 52 سال ہے۔ فرانس میں یہ 72 گھنٹے کے اندر دوسرا حملہ ہے۔

  • Share this:
فرانس: 72 گھنٹے میں دوسرا حملہ، چرچ کے گیٹ پر پادری کو گولی ماری، حملہ آور فرار
فرانس: 72 گھنٹے میں دوسرا حملہ، چرچ کے گیٹ پر پادری کو گولی ماری

لیون: فرانس (France) میں مسلسل حملے (Attack) ہوتے جارہے ہیں۔ فرانس کے لیون شہر (Lyon City) میں چرچ کے پاس ایک پادری کو گولی مارکر حملہ آور فرار ہوگیا۔ پادری کی عمر 52 سال کے قریب ہے۔ فرانس میں یہ 72 گھنٹے کے اندر یہ دوسرا حملہ ہے۔ ڈاکٹروں کے مطابق، گریف روایتی چرچ کے پادری کو ہفتہ کے روز بہت قریب سے پیٹ میں گولی (Pastor Shot) ماری گئی ہے۔ پادری کو اسپتال میں داخل کرایا گیا ہے، جہاں وہ زندگی اور موت سے جدوجہد کررہا ہے۔ حملہ آور کو پکڑنے کےلئے پولیس سرچ آپریشن چلا رہی ہے۔ یہ اطلاع فرانس پولیس نے دی۔


حملہ آوروں نے کالا لمبا کوٹ پہن رکھا تھا


پولیس کے مطابق، حملہ آوروں نے کالا لمبا کوٹ پہنا ہوا تھا اور شاٹ گن کو اپنی کوٹ کے اندر چھپا کر رکھا تھا۔ لیون شہر میں چرچ کے آس پاس کے باشندوں نے بتایا کہ پادری کو دو گولی ماری گئی۔ عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ انہوں نے دیکھا کہ ایک آدمی اچانک سے بھاگنے لگا اور پھر انہوں نے ایک پادری کو زخمی حالت میں چرچ کے دروازے پر خون سے لت پتھ دیکھا۔ حملہ آوروں کا اس حملے کے پیچھے کیا مقصد تھا، یہ معلوم نہیں ہو پایا ہے۔


فرانس کے وزیر اعظم نے اسے خطرناک حادثہ بتایا

فرانس کے وزیر اعظم جین کاسٹیکس نے رپورٹروں کو بتایا کہ یہ ایک ’خطرناک حادثہ’ ہے۔ حالانکہ ہمارے پاس اس حادثہ کے صحیح حقائق موجود نہیں ہیں۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ ’کرائسس سینٹر’ کو سرگرم کیا جائے گا۔

نیس میں چرچ کے اندر ہوا تھا دہشت گردانہ حملہ

گزشتہ دنوں ایک کے ذریعہ سیموئل پیٹی نام کے استاد کا قتل کئے جانے کا حادثہ پیش آیا۔ اس کے دو ہفتے کے اندر یہاں نیس شہر کے نوترے دام بیسلکا چرچ میں گزشتہ جمعرات کو ایک اور دہشت گردانہ حملہ ہوا۔ جنوب فرانس کے نیس شہر میں ایک ٹیونشیائی شخص آیا اور چرچ میں گھس کر کچھ لوگوں پر چاقووں سے حملہ کردیا۔ اس حادثہ میں تین لوگوں کی موت ہوگئی اور کئی دیگر زخمی ہوگئے۔ یہ معاملہ چرچ میں کیا گیا۔ چرچ کے اندر مرنے والے لوگوں میں ایک 60 سالہ خاتون ہے، جس کا سر تقریباً اسی طرح کاٹ کر الگ کردیا گیا جیسے ٹیچر سیموئل پیٹی کا کردیا گیا تھا۔ ایک دیگر 55 سالہ شخص کا گلا کاٹ کر الگ کردیا گیا۔ مہلوکین میں سے مرد چرچ کے رکھ رکھاو کا کام کرتا تھا۔ مرنے والوں میں 44 سال کی ایک دیگر خاتون بھی تھی، جو کئی بار چھرا گھونپے جانے کے بعد پاس کے ایک کیفے میں بھاگنے میں کامیاب رہی، لیکن بعد میں اس کی موت ہوگئی۔ ایک مشتبہ مرد کو گولی مارکر حراست میں لے لیا گیا۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Nov 01, 2020 07:40 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading