உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Google: گوگل 15,000 یوزرس کو ادا کرے گا 118 ملین ڈالر، کیا آپ کو بھی ملے گی رقم؟

    بڑی مقدار میں ذاتی ڈیٹا کے افشا کا بھی خدشہ ہے۔

    بڑی مقدار میں ذاتی ڈیٹا کے افشا کا بھی خدشہ ہے۔

    یہ مقدمہ پہلی بار 2017 میں دائر کیا گیا تھا جب تین خواتین نے تقریباً 17,000 ڈالر کی اجرت کے تفاوت کا حوالہ دیتے ہوئے کیلیفورنیا کے مساوی تنخواہ ایکٹ کی خلاف ورزی کی بات کہی تھی۔ انھوں نے اپنی کمپنی پر خواتین ملازمین کو کم تنخواہ دینے کا الزام بھی لگایا تھا۔

    • Share this:
      گوگل (Google) نے تقریباً 15,500 خواتین پر مشتمل کلاس ایکشن صنفی امتیاز کے مقدمے کو طے کرنے کے لیے 118 ملین ڈالر ادا کرنے پر اتفاق کیا ہے۔ ایک پریس ریلیز کے مطابق گوگل کو یہ بھی ضروری ہے کہ وہ ایک آزاد لیبر ماہر معاشیات کی خدمات حاصل کرے اور صنفی امتیاز کے مقدمے سے متعلق یوزرس کو رقم ادا کرے۔

      یہ مقدمہ پہلی بار 2017 میں دائر کیا گیا تھا جب تین خواتین نے تقریباً 17,000 ڈالر کی اجرت کے تفاوت کا حوالہ دیتے ہوئے کیلیفورنیا کے مساوی تنخواہ ایکٹ کی خلاف ورزی کی بات کہی تھی۔ انھوں نے اپنی کمپنی پر خواتین ملازمین کو کم تنخواہ دینے کا الزام بھی لگایا تھا۔ یکساں تنخواہ ایکٹ کے مطابق آجر کسی ملازم کی سابقہ ​​اجرت کی بنیاد پر مخالف جنس کے ملازمین، یا مختلف نسل یا نسل کے ملازمین کے درمیان تنخواہ کے تفاوت کی وضاحت نہیں کر سکتے ہیں۔ جیسا کہ اس میں 1 جنوری 2019 سے ترمیم کی گئی ہے

      کیلیفورنیا حکومت کے صنعتی تعلقات کی ویب سائٹ کے مطابق ترمیم شدہ مساوی تنخواہ ایکٹ آجر کو اپنے ملازمین میں سے کسی بھی اجرت کی شرح ادا کرنے سے منع کرتا ہے جو وہ مخالف جنس، یا کسی دوسری نسل، یا کسی اور نسل کے ملازمین کو ادا کرتا ہے جو کہ اس سے کم ہے۔ جب اسے مہارت کے حساب سے اجرت دی جاتی ہے تو یہ نا برابری نہیں ہے اور یہ اسی طرح کے کام کے حالات میں انجام دیا جاتا ہے۔

      مزید پڑھیں: National Herald Case: راہل گاندھی سے کل ای ڈی کے سامنے پھر پیش ہونے کیلئے کہا گیا

      مزید برآں یہ بھی کہا گیا ہے کہ موجودہ قانون کے تحت ایک ملازم کو یہ ظاہر کرنا چاہیے کہ اسے کسی ملازم یا مخالف جنس، ایک مختلف نسل، یا مختلف نسل کے ملازمین سے کم معاوضہ دیا جا رہا ہے جو کافی حد تک ملتے جلتے کام کر رہے ہیں۔ ایک بار جب کسی ملازم نے اس کا مظاہرہ کیا تو آجر کو یہ ظاہر کرنا چاہیے کہ تنخواہ میں تفاوت جائز ہے یا نہیں؟

      یہ بھی پڑھئے: یوگی سرکار کی بلڈوزر کارروائی کے خلاف جمعیۃ علما ہند کی سپریم کورٹ میں عرضی

      ایک آجر یہ ثابت کر کے مساوی تنخواہ ایکٹ کے دعوے کو شکست دے سکتا ہے کہ کافی حد تک ملتے جلتے کام کی تنخواہ میں فرق سنیارٹی، میرٹ اور ایک ایسا نظام ہے جو پیداوار اور/یا جنس یا نسل کے علاوہ کسی اور حقیقی عنصر کی پیشکش کرتا ہے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: