உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Hajj 2022: آج وقوفِ عرفہ کا اہتمام، لاکھوں عازمین حج ایک ساتھ میدان عرفات میں جمع، ظہر اور عصر کی نمازیں کریں گےادا

    تصویر ٹوئٹر: Makkah Reciters

    تصویر ٹوئٹر: Makkah Reciters

    سعودی حکام کے مطابق اس سال حجاج کی عمر 65 سال سے کم رکھی گئی۔ جو کہ کووڈ-19 کے خلاف مکمل ویکسین لگائی گئی ہے اور پی سی آر ٹیسٹ کا نتیجہ منفی ہے۔

    • Share this:
      حج کے دوران عرفہ کا دن نہایت اہمیت کا حامل ہوتا ہے۔ وقوفِ عرفہ، حج کے اہم ترین فرائض میں سے ایک ہے۔ جو کہ مناسک حج کا دوسرا دن ہے۔ سعودی عرب اور دیگر خلیجی ممالک میں 8 جولائی کو یوم عرفہ کا اہتمام کیا جائے گا۔ جب کہ ہندوستان اور پاکستان میں 9 جولائی یوم عرفہ کا اہتمام ہوگا۔

      یوم عرفہ کا اہتمام نویں ذی الحجہ کو کیا جاتا ہے۔ ذی الحجہ ہجری سال کا آخری مہینہ ہے۔ حج اس وقت مکمل ہوتا ہے جب حجاج کرام میدان عرفات میں جمع ہوتے ہیں۔ یہاں ذکر، عبادات اور دعاؤں کے ساتھ دن بھر کی نمازیں ادا کی جاتی ہیں۔ حجاج کرام مکہ سے تقریباً 15 کلومیٹر دور عرفات میں ایک دن مناسک حج ادا کرتے ہیں اور طلوع آفتاب سے غروب آفتاب تک خیموں میں رہتے ہیں۔

      پیغمبر اسلام حضرت محمد صلی اللہ وسلم نے میدان عرفات میں اپنی زندگی کا آخری خطبہ دیا تھا، جسے خطبہ حجۃ الوداع کہا جاتا ہے۔ یہاں جمع کے لمحے کو ’’خدا کے سامنے کھڑا ہونے‘‘ کے طور پر بیان کیا جا سکتا ہے۔ یوم عرفہ کا روزہ جہاں حاجیوں کے لیے حرام ہے، وہیں غیر حاجیوں کے لیے یہ ایک انتہائی مستحسن سنت ہہے۔ ایک حدیث کے مطابق اللہ تعالیٰ دو سال کے گناہ معاف کر دیتا ہے۔

      یہ بھی پڑھیں: Hajj 2022: آب زم زم کی تقسیم کیلئےجدید ترین ٹکنالوجی کااستعمال، ایک دن میں 2 لاکھ سےزائدبوتلیں تیار

      جہاں مسلمان یوم عرفہ کو شکرانے کے دن کے طور پر مناتے ہیں، اس کے اگلے دن عید الاضحی کا اہتمام کیا جاتا ہے۔ اسی دن حضرت ابراہیم علیہ السلام کی عظیم قربانی کو یاد کیا جاتا ہے۔ عام اوقات میں تقریباً 2.5 ملین مسلمان حجاج کوہ عرفات پر جمع ہوتے ہیں۔ لیکن عالمی وبا کورونا وائرس (Covid-19) کی وجہ سے حجاج کی صحت اور حفاظت کو یقینی بنانے کے لیے یہ تعداد کم کی گئی ہے۔

      یہ بھی پڑھیں: Hajj 2022: آب زم زم کی تقسیم کیلئےجدید ترین ٹکنالوجی کااستعمال، ایک دن میں 2 لاکھ سےزائدبوتلیں تیار

      حج کے دوران احتیاطی تدابیر پر عمل درآمد کیا جارہا ہے۔ اس طرح سعودی عرب کی حکومت نے اس سال صرف 10 لاکھ عازمین حج کو ہی حج کرنے کی اجازت دی ہے۔

      یہ بھی پڑھیں: Hajj 2022: خیموں کے سب سے بڑے شہر منیٰ میں عازمین حج کا قیام، جمعہ کو مناسک حج کا دوسرا دن



      سعودی حکام کے مطابق اس سال حجاج کی عمر 65 سال سے کم رکھی گئی۔ جو کہ کووڈ-19 کے خلاف مکمل ویکسین لگائی گئی ہے اور پی سی آر ٹیسٹ کا نتیجہ منفی ہے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: