உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Hajj 2022: مکہ مکرمہ کے وہ تاریخی راستے، جہاں سے گزر کر عازمین حج خوشی محسوس کرتے ہیں!

    سفر حج کے لیے پہلے بری راستوں کا استعمال کیا جاتا تھا۔ (تصویر: اے ایف پی)

    سفر حج کے لیے پہلے بری راستوں کا استعمال کیا جاتا تھا۔ (تصویر: اے ایف پی)

    حج کے لیے دنیا بھر سے حجاج کرام مکہ مکرمہ کا رخ کرتے ہیں۔ فضائی سفر سے پہلے زمینی اور تجارتی راستوں سے یہ مسافت طئے کی جاتی تھی۔ شہر مکہ صدیوں پرانی تہذیبی اور مذہبی روایات کا اہم ترین حصہ ہے۔

    • Share this:
      صدیوں سے لاکھوں حجاج کرام اسلام کے پانچ ستونوں میں سے ایک حج کی ادائیگی کے لیے مکہ مکرمہ کا طویل فاصلہ طے کرتے آرہے ہیں۔ سفر حج کے دوران عرب کے وسیع صحرا کو عبور کیا جاتا ہے۔ بہت سے مسلمانوں کی یہ سب سے بڑی خواہش ہوتی ہے کہ اپنی زندگی میں کم از کم ایک بار مکہ مکرمہ اور مدینہ منورہ کا حج کے لیے سفر کیا جائے۔

      حج کے لیے دنیا بھر سے حجاج کرام مکہ مکرمہ کا رخ کرتے ہیں۔ فضائی سفر سے پہلے زمینی اور تجارتی راستوں سے یہ مسافت طئے کی جاتی تھی۔ شہر مکہ صدیوں پرانی تہذیبی اور مذہبی روایات کا اہم ترین حصہ ہے۔

      مکمہ مکرمہ میں داخل ہونے کے لیے مشہور راستے:

      دور حاضر سے قنل حجاج کرام اونٹوں، گھوڑوں اور گدھوں پر قافلوں کی شکل میں مہینوں تک سفر طئےکیا کرتے تھے۔ کنوؤں، تالابوں اور راہگیروں پر نصب کردہ اسٹیشنوں پر رک کر یہ سفر طئے کیا جاتا، اس سب کے باوجود مکہ مکرمہ میں داخل ہونے کے لیے چند ایسے مشہور راستہ ہیں، جنھیں ہر دور میں اہمیت حاصل رہی ہیں۔

      علما اور محققین کا خیال ہے کہ مکہ مکرمہ تک پہنچنے کے پانچ اہم راستے ہیں، لیکن انہیں ثانوی راستے سمجھا جاتا ہے۔ بنیادی چار راستوں میں شمال مشرقی کوفی راستہ اہم مانا جاتا ہے۔ اس کے علاوہ دیگر راستوں میں دارب زبیدہ، عثمانی یا شامی راستہ، شمال مغربی افریقی یا مصری راستہ اور  جنوب مشرقی یمنی اور عمانی زمینی اور سمندری راستے شامل ہیں۔

      طویل فاضلے اور شوق سفر:

      موجودہ عراق اور سعودی عرب کے ذریعے 1,400 کلومیٹر سے زیادہ پھیلا ہوا کوفی راستہ اسلام سے قبل بھی مکہ مکرمہ کے سفر کے لیے استعمال ہوتا تھا۔ یہ عراقی شہر کوفہ سے مکہ مکرمہ تک پہنچتا ہے، جو کہ نجف اور الثلابیہ سے ہوتے ہوئے وسطی عرب کے گاؤں فید تک جاتا ہے۔

      یہ بھی پڑھئے: سفر حج پر 300 عازمین نے کیا ایسا کام، ہوگئے گرفتار، دو لاکھ کا لگا جرمانہ

      اس کے بعد یہ راستہ مغرب کی طرف مدینہ اور جنوب مغرب میں مکہ مکرمہ کی طرف موڑتا ہے، مکہ پہنچنے سے پہلے خالی کوارٹر، مدین بن سلیم اور دھت عرک کی وسیع اور صحرائی ریت سے گزرتا ہے۔

      یہ بھی پڑھئے: Hajj 2022: مناسک حج کاآج سےہوگاآغاز، 10 لاکھ سےزائدعازمین حج کوسفرحج کی سعادت حاصل


      مورخین کا خیال ہے کہ زبیدہ کا نام عباسی خلیفہ ہارون الرشید کی اہلیہ زبیدہ بن جعفر کے نام پر رکھا گیا تھا، ان کے خیراتی کاموں اور مسافرین کے لیے مسافر خانوں کی تعمیر کی وجہ سے یہ نام مشہور ہوا۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: