ہوم » نیوز » عالمی منظر

Hajj 2021: عازمین منیٰ سے حج کاسب سے اہم رکن وقوفِ عرفہ ادا کرنے کے لیے آج میدانِ عرفات روانہ ہوں گے

حج کے دوران سماج دوری کے بھی زبردست اقدامات کیے گئے تاکہ یہ یقینی بنایا جاسکے کہ حجاج کورونا وائرس سے متاثر نہ ہوسکے۔ صحن کعبہ میں دن میں کئی بار سینیٹائزیشن بھی کیا جارہا ہے۔

  • Share this:
Hajj 2021: عازمین منیٰ سے حج کاسب سے اہم رکن وقوفِ عرفہ ادا کرنے کے لیے آج میدانِ عرفات روانہ ہوں گے
عازمین منیٰ سے حج کا سب سے اہم رکن وقوفِ عرفہ ادا کرنے کے لیے میدانِ عرفات روانہ ہوں گے۔ (Photo:AP)

امسال مناسک حج کے پہلے روز کل عازمین حج منیٰ کی وادی میں اپنی قیام گاہوں میں پہنچ گئے ہیں ۔ عازمین اپنا وقت نماز ، تسبیح ، تکبیر اور تلبیہ کی کثرت کرتے ہوئے گزار رہے ہیں ،اس کے سبب منی کی وادی روح پرور اور ایمان افروز منظر پیش کررہی ہے ۔آج بروز پیر عازمین منیٰ سے حج کا سب سے اہم رکن وقوفِ عرفہ ادا کرنے کے لیے میدانِ عرفات روانہ ہوں گے۔سعودی عرب میں  سینچر کے روز سخت کووڈ۔19 احتیاطی تدابیر کے تحت حج کا آغاز کیا گیا ، مسلسل دوسرے سال بھی کورونا کے حالات کے تحت مکمل احتیاط کے ساتھ حج کی سرگرمیاں انجام دی جارہی ہیں۔عازمین حج، حج سے متعلق عبادت کے لئے ہفتہ کی صبح مکہ پہنچے۔ واضح رہے کہ حج اسلام کے پانچ ستونوں میں سے ایک ہے اور صاحب استطاعت مسلمان پر ایک بار حج فرض ہے۔


سیکڑوں مسلمان مکہ مکرمہ کے الزیدی اسٹیشن al-Zaidi station پہنچے، جہاں ان کے اجازت ناموں کی جانچ پڑتال کے بعد 1770 بسیں انہیں کعبہ کے صحن تک لے جائیں گی۔ اس کی زیارت سے قبل حاجیوں سے کہا گیا کہ وہ شعائر Shaaer Smart Card اسمارٹ کارڈ کا موبائل ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کریں۔


عازمین منیٰ سے حج کا سب سے اہم رکن وقوفِ عرفہ  ادا کرنے کے لیے میدانِ عرفات روانہ ہوں گے۔ (Photo:@hsharifain/Twitter)
عازمین منیٰ سے حج کا سب سے اہم رکن وقوفِ عرفہ ادا کرنے کے لیے میدانِ عرفات روانہ ہوں گے۔ (Photo:@hsharifain/Twitter)


ایپ پر ایک حاجی کی ذاتی اور رہائش گاہ کی تفصیلات کے ساتھ ساتھ ان کی حج کی درخواست بھی ظاہر کی جائے گی۔ Shaaer اسمارٹ کارڈ ایک حاجی کی صحت کی حیثیت سے منسلک ہے۔ اس کے ذریعہ حاجی کو حج کی خدمات حاصل کرنے اور اس کی درجہ بندی کرنے۔ یہ ایپ صحن کعبہ کے آس پاس اور اپنے پورے سفر کے دوران آمد و رفت میں آسانی اور دیگر امور تک رسائی حاصل کرنے کے لیے مدد فراہم کرے گا۔

عام طور پر مکہ مکرمہ میں دنیا بھر کے 25 لاکھ سے زیادہ مسلمانوں کو حج کے لئے خوش آمدید کیا جاتا ہے۔ تاہم کورونا وائرس وبائی مرض کی وجہ سے اس سال حج سعودی عرب میں بسنے والے صرف 60000 افراد کے لیے محدود کردیا گیا، جنھیں وائرس سے بچاؤ کے لیے ویکسین دی گئی۔

پچھلے سال وبا شروع ہونے کے صرف مہینوں بعد مملکت سعودی عرب نے صرف 10000 افراد کو یہ رسم ادا کرنے کی اجازت دی۔

سعودی حکام نے کہا ہے کہ وہ گذشتہ سال کے حج کی کامیابی کو دہرانے کی امید کرتے ہیں، جس کی خصوصیت یہ تھی کہ تمام عازمین کو مکمل طور پر ہر طرح کی سہولیات پہنچائی گئی اور کووڈ۔19 سے متعلق احتییاطی اقدامات کا بھی مکمل خیال رکھا گیا۔

یہ بات قابل ذکر ہے کہ صرف ویکسین حاصل کرنے والے شہریوں اور رہائشیوں کو ہی یہ حج ادا کرنے کی اجازت دی گئی ہے۔ ان کی عمر 18 سے 65 سال کے درمیان ہونی چاہئے ، انہیں دائمی بیماریوں میں مبتلا نہیں ہونا چاہئے اور اس سے پہلے حج نہیں کرنا چاہئے۔

العربیہ کی خبر کے مطابق حج کے دوران سماج دوری کے بھی زبردست اقدامات کیے گئے تاکہ یہ یقینی بنایا جاسکے کہ حجاج کورونا وائرس سے متاثر نہ ہوسکے۔ صحن کعبہ میں دن میں کئی بار سینیٹائزیشن بھی کیا جارہا ہے۔ حجاج کرام اور دیگر کارکنوں کو زمزم کے پانی کی خدمت کے لئے کئی دوسرے روبوٹ بھی استعمال کیے جارہے ہیں۔
Published by: Mohammad Rahman Pasha
First published: Jul 19, 2021 09:32 AM IST