اپنا ضلع منتخب کریں۔

    Hijab Ban: سوئٹزر لینڈ میں حجاب پر پابندی کی تیاری! خلاف ورزی پر دینا ہوگا 82 ہزار روپے کا جرمانہ

    سوئٹزر لینڈ میں حجاب پر پابندی کی تیاری! خلاف ورزی پر دینا ہوگا 82 ہزار روپے  کا جرمانہ

    سوئٹزر لینڈ میں حجاب پر پابندی کی تیاری! خلاف ورزی پر دینا ہوگا 82 ہزار روپے کا جرمانہ

    Hijab Ban Latest News: حجاب کے خلاف ایران میں ہورہے احتجاج کے درمیان سوئٹزرلینڈ میں بھی بڑی تبدیلی کے اشارے ہیں ۔ سوئٹزرلینڈ سرکار نے ‘Burqa Ban’ قانون کے تحت اب اپنا چہرہ ڈھکنے کے جرمانہ کی تجویز تیار کی ہے ۔ جرمانہ کی رقم 900 پاونڈ یعنی تقریبا 82 ہزار روپے طے کی گئی ہے ۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • inter, Indiaswitzerlandswitzerland
    • Share this:
      برن: حجاب کے خلاف ایران میں ہورہے احتجاج کے درمیان سوئٹزرلینڈ میں بھی بڑی تبدیلی کے اشارے ہیں ۔ سوئٹزرلینڈ سرکار نے ‘Burqa Ban’ قانون کے تحت اب اپنا چہرہ ڈھکنے کے جرمانہ کی تجویز تیار کی ہے ۔ جرمانہ کی رقم 900 پاونڈ یعنی تقریبا 82 ہزار روپے طے کی گئی ہے ۔ فی الحال سرکار نے مسودہ تیار کرکے اس کو منظوری کیلئے پارلیمنٹ میں بھیج دیا ہے ۔ حالانکہ اس میں کئی رعایت بھی دی گئی ہے، جیسے پالیٹیکل کمپلیکس ، عبادت گاہ اور فلائٹ میں چہرہ ڈھکنے پر پابندی لاگو نہیں ہوگی ۔ اس کے علاوہ صحت، سیکورٹی ، موسمی حالات اور مقامی رسم و رواج سے متعلق وجوہات کی بنیاد پر چہرہ ڈھکنے کو مانا جائے گا ۔ آرٹ کی نمائش اور اشتہارات کو بھی چھوٹ دی گئی ہے ۔

      سوئس سرکار کے تیار مسودہ میں کہا گیا ہے کہ قانون کے تحت افسران کی منظوری اور شخصی آزادی کے بنیادی حقوق کا استعمال کرتے ہوئے ماسک پہننے کی اجازت دی جائے گی ۔ خیال رہے کہ سوئٹزرلینڈ میں پچھلے سال عوامی مقامات میں چہرہ ڈھکنے پر پابندی لگانے کی تجویز پاس کی گئی تھی ۔ یہ تجویز اسی گروپ نے تیار کی ہے، جس نے اسلامی میناروں پر پابندی لگانے کی تجویز تیار کی تھی ۔

      یہ بھی پڑھئے: '...تو چھڑ جائے گا ورلڈ وار۔3'، یوکرین کے ناٹو میں شامل ہونے کی تجویز پر روس کی بڑی دھمکی


       

      یہ بھی پڑھئے: اقوام متحدہ میں یوکرینی علاقوں پرروسی قبضے کے خلاف قراردادمنظور،ہندوستان نے نہیں ڈالا ووٹ


      جانکاری کے مطابق چہرہ ڈھکنے پر جرمانہ کے کابینی تجویز میں سیدھے طور پر برقع کا کوئی تذکرہ نہیں ہے ۔ خبروں کی مانیں تو اس فیصلہ کا مقصد پرتشدد مظاہرین کو ماسک پہننے سے روکنا ہے، لیکن مقامی سیاست دانوں اور میڈیا نے اس کو برقع پر پابندی قرار دیا ہے ۔ ایک بیان میں کابینہ نے کہا کہ چہرے کو ڈھکنے پر پابندی کا مقصد عوامی سیکورٹی اور لا ائنڈ آرڈر کو بنائے رکھنا ہے ۔ ڈیلی میل کی ایک خبر کے مطابق پابندی حامیوں کا کہنا ہے کہ چہرے کو ڈھکنا شدت پسندی کی علامت ہے ۔

      حالانکہ مسلم گروپ نے اس کو بھید بھاو بتایا ہے ۔ جانکاری کے مطابق عوامی مقامات پر پوری طرح سے چہرہ ڈھکنے پر پابندی پہلی مرتبہ گیارہ اپریل 2011 کو فرانس نے لگائی تھی ۔ حالانکہ ڈنمارک، آسٹریا ، نیدرلینڈ اور بلغاریہ میں بھی ایسا ہی قانون ہے ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: