உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    تین گھنٹے میں 1400 اے ٹی ایم سے اڑا لئے 90 کروڑ روپے

    ٹوکیو: ہندوستان میں اے ٹی ایم میں ڈکیتی کی خبریں سنی ہوں گی ، لیکن جاپان میں اے ٹی ایم سے رقم نکالنے کا ایک ایسا واقعہ سامنے آیا ہے ، جو آپ کا ہوش اڑا دے گا ۔

    ٹوکیو: ہندوستان میں اے ٹی ایم میں ڈکیتی کی خبریں سنی ہوں گی ، لیکن جاپان میں اے ٹی ایم سے رقم نکالنے کا ایک ایسا واقعہ سامنے آیا ہے ، جو آپ کا ہوش اڑا دے گا ۔

    ٹوکیو: ہندوستان میں اے ٹی ایم میں ڈکیتی کی خبریں سنی ہوں گی ، لیکن جاپان میں اے ٹی ایم سے رقم نکالنے کا ایک ایسا واقعہ سامنے آیا ہے ، جو آپ کا ہوش اڑا دے گا ۔

    • Pradesh18
    • Last Updated :
    • Share this:
      ٹوکیو: ہندوستان میں اے ٹی ایم میں ڈکیتی کی خبریں سنی ہوں گی ، لیکن جاپان میں اے ٹی ایم سے رقم نکالنے کا ایک ایسا واقعہ سامنے آیا ہے ، جو آپ کا ہوش اڑا دے گا ۔  یہاں جعلی کریڈٹ کارڈ کی مدد سے اے ٹی ایم مشینوں سے 1.44 ارب ین (تقریبا 90 کروڑ روپے) نکال لئے گئے  ہیں ۔ کیوڈو نیوز ایجنسی کے مطابق یہ رقم تین گھنٹے کے اندر جاپان کے مختلف شہروں کے 1400 اے ٹی ایم مشینوں سے نکالی گئی ہے۔  اب پولیس اس معاملے کی جانچ میں مصروف ہو گئی ہے ۔

      ذرائع نے بتایا کہ ملک بھر کے كنوينينس اسٹورز میں نصب اے ٹی ایم کے ذریعے یہ چوری کی گئی ہے ۔ پولیس کو شک ہے کہ اس واقعہ میں 100 سے زیادہ لوگوں کا ایک گروہ ملوث ہے ۔ ان بدمعاشوں نے ٹوکیو میں 15 مئی کو تین گھنٹے کے دوران ان واردات کو انجام دیا ۔ جنوبی افریقہ کے ایک بینک کی طرف سے جاری کریڈٹ کارڈ کا ڈاٹا لیک کرکے جعلی کریڈٹ کارڈ بنائے گئے تھے ، ایسے میں پولیس کو شبہ ہے کہ اس میں کوئی بین الاقوامی جرائم گروہ شامل ہوسکتا ہے ، اس لیے جاپان کی پولیس غیر ملکی جانچ ایجنسیوں سے بھی مدد لینے کا منصوبہ بنا رہی ہے ۔

      اتوار 15 مئی کو صبح 5 بجے سے صبح 8 بجے کے درمیان ملک بھر کے 1400 اے ٹی ایم سے یہ رقم نکالی گئی ۔ ایک دن میں پیسے نکالنے کی حد مقرر ہونے کی وجہ سے ہر کارڈ سے 60000 روپے نکالے گئے ۔ رقم نکالنے کے لئے 7 الیون کیش مشینوں کو نشانہ بنایا گیا، جس میں جاپان کی سب سے زیادہ کیش مشینوں کے برعکس غیر ملکی کارڈ قبول کئے جاتے ہیں ۔ پیسے نکالنے والوں نے جنوبی افریقہ کے بینکوں سے ڈاٹا چراکر جعلی اے ٹی ایم بنائے تھے ۔

      جنوبی افریقہ کے اسٹینڈرڈ بینک کے تخمینہ کے مطابق 192.4 ملین ڈالر (تقریبا 1.30 ارب روپے) کا نقصان ہوا ہے ۔ بینک کا کہنا ہے کہ یہ کارڈ بہت کم تعداد میں بنائے گئے تھے اور اس سے كسٹمرس کو کوئی نقصان نہیں ہوا ہے ۔ پولیس اس معاملے کی جانچ کر رہی ہے ۔
      First published: