உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    جب سڑک پر کھڑے ایک مسلم شخص کو گلے لگا کر رونے لگے پیرس کے باشندے

    نئی دہلی۔ خوفناک دہشت گردانہ حملے سے برسرپیکار پیرس میں یہ ایک عام پیغام دینے کی کوشش تھی، جس نے لوگوں کے دلوں سے دوریاں مٹا کرامید کی کرن روشن کرنے کا کام کیا ہے۔

    نئی دہلی۔ خوفناک دہشت گردانہ حملے سے برسرپیکار پیرس میں یہ ایک عام پیغام دینے کی کوشش تھی، جس نے لوگوں کے دلوں سے دوریاں مٹا کرامید کی کرن روشن کرنے کا کام کیا ہے۔

    نئی دہلی۔ خوفناک دہشت گردانہ حملے سے برسرپیکار پیرس میں یہ ایک عام پیغام دینے کی کوشش تھی، جس نے لوگوں کے دلوں سے دوریاں مٹا کرامید کی کرن روشن کرنے کا کام کیا ہے۔

    • IBN7
    • Last Updated :
    • Share this:

      نئی دہلی۔ خوفناک دہشت گردانہ حملے سے برسرپیکار پیرس میں یہ ایک عام پیغام دینے کی کوشش تھی، جس نے لوگوں کے دلوں سے دوریاں مٹا کرامید کی کرن روشن کرنے کا کام کیا ہے۔


      دہشت گرد تنظیم داعش کے حملے میں ہلاک ہونے والوں کو خراج عقیدت پیش کرنے کے لئے جب لوگ جمع ہوئے تھے، اسی درمیان، ایک مسلم شخص بھیڑ سے باہر آیا اور اس نے سب سے کہا کہ کیا وہ اسے گلے لگائیں گے؟


      اپنی آنکھوں کو ڈھکنے کے بعد اس نے خود کو ایک تختی کے پیچھے چھپا لیا، جس پر لکھا تھا، 'میں ایک مسلم ہوں لیکن مجھ سے کہا گیا ہے کہ میں دہشت گرد ہوں۔ مجھے آپ کے اوپر بھروسہ ہے، کیا آپ کو مجھ پر ہے؟ اگر جواب ہاں ہے تو مجھے گلے لگائیے۔


      دل کو چھو جانے والا یہ واقعہ ڈی لا ریپبلک پر ہوا، جو خراج عقیدت پیش کرنے کے لئے ایک غیر رسمی پوائنٹ ہے۔ پیرس میں 129 لوگوں کو قتل کرنے والے دہشت گردانہ حملے میں فائرنگ کے تین واقعات اسی کے پاس میں ہوئے تھے۔


      دل کو چھو جانے والے ویڈیو میں آنسوؤں کے ساتھ درجنوں لوگوں نے ایک ایک کر اس شخص کو گلے لگایا۔ لوگوں نے اسے تسلیم بھی کیا کہ معاشرے کو تہس نہس کرنے کی داعش کی کوشش ناکام ثابت ہوئی ہے۔


      اپنی آنکھوں پر باندھے گئے کپڑے کو ہٹانے کے بعد اس نامعلوم شخص نے کہا، 'میں گلے لگانے کے لئے سب کا شکریہ ادا کرنا چاہوں گا۔ میں نے ایسا سب کو پیغام دینے کے لئے کیا۔ میں ایک مسلم ہوں اور ایسا ہونے سے میں دہشت گرد نہیں بن جاتا ہوں۔ میں نے کبھی کسی کو نہیں مارا ہے۔ اس شخص نے آگے یہ بھی کہا کہ میں آپ کو یہ بھی بتا سکتا ہوں کہ گزشتہ جمعہ کو میری سالگرہ بھی تھی لیکن میں باہر نہیں گیا۔


      اس شخص نے مزید کہا، 'میں تمام متاثرین کے گھر والوں کے تئیں تعزیت کا اظہار کرتا ہوں۔ میں صرف یہی بتانا چاہتا ہوں کہ مسلم ہونے سے ہی کوئی دہشت گرد نہیں بن جاتا۔ ایک دہشت گرد صرف دہشت گرد ہوتا ہے۔ ایک مسلم  ایساکبھی نہیں کر سکتا۔


      اس ویڈیو کو اب تک فیس بک پر 10 ملین سے بھی زیادہ بار دیکھا جا چکا ہے اور دو دن میں ہی ڈیڑھ لاکھ سے زیادہ لائكس بھی مل چکے ہیں۔

      First published: