உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Palestine: مغربی کنارے میں شدید جھڑپوں کے دوران کئی فلسطینی زخمی، اسرائیلی آباد کاروں کی جانب سے زیادتی

     اسرائیلی فوجیوں کی فائرنگ سے 247 فلسطینی مظاہرین زخمی ہوئے ہیں۔

    اسرائیلی فوجیوں کی فائرنگ سے 247 فلسطینی مظاہرین زخمی ہوئے ہیں۔

    فلسطینی عینی شاہدین نے بتایا کہ 2005 میں خالی ہونے والی ایک پرانی بستی میں اسرائیلی آباد کاروں کی حفاظت کے لیے پہنچنے والے فلسطینی مظاہرین اور اسرائیلی فوجیوں کے درمیان برقعے میں شدید جھڑپیں ہوئیں۔ فلسطینی وزارت خارجہ نے کہا کہ وہ اسرائیلی حکومت کو فلسطینی عوام پر اسرائیلی جارحیت کا مکمل اور براہ راست ذمہ دار ٹھہراتی ہے۔

    • Share this:
      مغربی کنارے کے شمالی شہر نابلس (Nablus) کے قریب شدید جھڑپوں کے دوران کئی فلسطینی اور ایک اسرائیلی فوجی زخمی ہو گیا۔ فلسطینی ہلال احمر سوسائٹی (Palestinian Red Crescent Society) نے ایک بیان میں کہا ہے کہ نابلس کے شمال مغرب میں واقع گاؤں برقع میں اسرائیلی فوجیوں کی فائرنگ سے 247 فلسطینی مظاہرین زخمی ہوئے ہیں۔

      بیان میں کہا گیا کہ زخمیوں میں سے 10 کو زندہ گولہ بارود سے اور 48 کو ربڑ کی کوٹیڈ دھاتی بندوقوں سے گولی ماری گئی، جس میں سے ایک کی حالت تشویشناک ہے جب اسے پیٹ میں گولی لگی تھی۔ اس میں مزید کہا گیا کہ برقعہ کے قریب واقع گاؤں بازاریہ میں اسرائیلی فوجیوں کے ساتھ جھڑپوں کے دوران 54 فلسطینی زخمی ہوئے۔ اسرائیلی میڈیا نے بتایا کہ برقعہ اور بازاریہ میں جھڑپوں کے دوران ایک فوجی زخمی ہوا، جہاں فوجیوں نے پتھراؤ کرنے والے فلسطینیوں کو منتشر کرنے کے لیے فائرنگ کی۔


      فلسطینی عینی شاہدین نے بتایا کہ 2005 میں خالی ہونے والی ایک پرانی بستی میں اسرائیلی آباد کاروں کی حفاظت کے لیے پہنچنے والے فلسطینی مظاہرین اور اسرائیلی فوجیوں کے درمیان برقعے میں شدید جھڑپیں ہوئیں۔ فلسطینی وزارت خارجہ نے کہا کہ وہ اسرائیلی حکومت کو فلسطینی عوام پر اسرائیلی جارحیت کا مکمل اور براہ راست ذمہ دار ٹھہراتی ہے۔

      ایک بیان میں وزارت نے کہا کہ اسرائیلی فوجی اور آباد کار ہمارے لوگوں کے خلاف اپنی جارحیت کو بڑھا رہے ہیں جو کرسمس اور نئے سال کا جشن منا رہے ہیں۔

      قومی، بین الاقوامی اور جموں وکشمیر کی تازہ ترین خبروں کےعلاوہ تعلیم و روزگار اور بزنس کی خبروں کے لیے نیوز18 اردو کو ٹویٹر اور فیس بک پر فالو کریں ۔

      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: