உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    امریکہ میں طوفان ’ایان‘ کا قہر، سڑکوں پر نظر آئی شارک، فلوریڈا میں سیلاب اور بجلی کا بحران

    امریکہ میں طوفان ’ایان‘ کا قہر، سڑکیں بنی ندیاں، فلوریڈا میں سیلاب اور بجلی کا بحران

    امریکہ میں طوفان ’ایان‘ کا قہر، سڑکیں بنی ندیاں، فلوریڈا میں سیلاب اور بجلی کا بحران

    سوشل میڈیا پر ایان طوفان سے جڑے کئی ویڈیوز سامنے آئے ہیں۔ ایک ویڈیو مین سڑکوں پر بارش اور سیلاب کے درمیان ساحلی شہر مین شارک بھی دکھائی دی۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • New Delhi, India
    • Share this:
      طوفان ایان نے امریکہ کے فلوریڈا صوبے میں سیلاب اور بجلی کا بحران پیدا کردیا ہے۔ اسٹوک آئی لینڈ کے پاس 2 سے 7 میٹر اونچی تیز لہروں میں ایک ناو ڈوبنے سے 23 لوگ لاپتہ ہیں۔ فلوریڈا کا ایک اسپتال پانی سے بھر گیا ہے اور چوتھے فلور پر موجود آئی سی یو کی چھت اڑ گئی ہے۔ 240 کلو میٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے طوفان فلوریڈا ساحل سے ٹکرایا۔ تبھی سے شدید بارش جاری ہے۔ کئی علاقوں میں سیلاب کی صورتحال پیدا ہوگئی ہے۔

      پورٹ شارلیٹ واقع ایچ سی اے فلوریڈا فاسسیٹ اسپتال کی ڈاکٹڑ برزٹ بوڈائین نے بتایا کہ طوفان خطرناک ہوتا جارہا ہے لیکن یہ انداز نہیں تھا کہ اس سے آئی سی یو کی چھت ہی اڑ جائے گی۔ حالات بے حد نازک ہیں۔ صوبے کے جنوب مغربی ساحل پر زمرہ-4 کے تباہ کن طوفان کی وجہ سے سڑکیں ندی کا نظارہ پیش کررہی ہیں جب کہ سیلاب جیسے حالات بن گئے ہیں۔ جارجیا و ساوتھ کیرولینا میں حالات خراب ہیں۔ اس سے فورٹ مائرس شہر سب سے زیادہ متاثر ہوا ہے۔ یہاں خطرہ دیکھتے ہوئے 8.5 لاکھ گھروں کی بجلی سپلائی روک دی گئی ہے۔ قریب 20 لاکھ لوگ بری طرح متاثر ہوئے ہیں۔

      یہ بھی پڑھیں:
      اسرائیلی فوج کے ہاتھوں چار فلسطینی ہلاک، شہر جنین میں عوام کے اندر شدید غم و غصہ

      یہ بھی پڑھیں:
      ایران کے ریولیشنری گارڈس نے عراق میں کیا دہشت گردوں کے ٹھکانوں پر میزائل حملہ، 13 کی موت

      سڑکوں پر نظر آئی شارک، پیڑ اور کھمبے گر گئے
      سوشل میڈیا پر ایان طوفان سے جڑے کئی ویڈیوز سامنے آئے ہیں۔ ایک ویڈیو مین سڑکوں پر بارش اور سیلاب کے درمیان ساحلی شہر مین شارک بھی دکھائی دی۔ ایک دیگر ویڈیو میں جم کینٹور نامی ایک رپورٹر لڑکھڑاتے ہوئے نظر آرہا ہے۔ وہ کہہ رہا ہے، میں کھڑا نہیں ہوپارہا ہوں، ہوا بہت تیز ہے۔ اسے ایک ستون کا سہارا لینا پڑا۔ کئی جگہ پیڑ اور کھمبے گر گئے ہیں جب کہ زیادہ تر عمارتوں میں سیلاب کا پانی اندر گھس آیا ہے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: