உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ملک کے نام خطاب میں Imran Khan نے کہا- پاکستان میں کھلے عام ہو رہی ہے اراکین پارلیمنٹ کی خریدوفروخت

    پاکستانی وزیر اعظم عمران خان۔

    پاکستانی وزیر اعظم عمران خان۔

    پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان نے جمعہ کے روز کہا کہ سپریم کورٹ کے اس فیصلے سے مایوسی ہوئی، جس میں قومی اسمبلی کو تحلیل کرنے اور صدر عارف علوی کو وزیر اعظم عمران خان کے ذریعہ دیئے گئے مشورے کو غیر آئینی قرار دیا گیا ہے۔

    • Share this:
      اسلام آباد: پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان نے جمعہ کے روز کہا کہ سپریم کورٹ کے اس فیصلے سے مایوسی ہوئی، جس میں قومی اسمبلی کو تحلیل کرنے اور صدر عارف علوی کو وزیر اعظم عمران خان کے ذریعہ دیئے گئے مشورے کو غیر آئینی قرار دیا گیا ہے۔ قوم کے نام اہنے خطاب میں انہوں نے کورٹ کے فیصلے پر افسوس ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ غیر ملکی سازش کی بات کو عدالت نے کیوں نہیں دیکھا، عدالت کو ثبوت دیکھنے چاہئے تھے۔

      عمران خان نے مزید کہا، ‘ملک میں کھلے عام اراکین پارلیمنٹ کا خریدوفروخت ہو رہی ہے۔ سیریم کورٹ کو اسے دیکھنا چاہئے تھا۔ اپوزیشن کے لوگ بکے ہوئے ہیں‘۔ اپنے خطاب کے دوران عمران خان نے ایک بار پھر ہندوستان کی تعریف کی۔ وہ ہندوستان کا نام لے کر جذباتی ہوئی اور کہا کہ ہندوستان میں انہیں بہت عزت ملی۔ ہندوستان کو خود دار ملک بتاتے ہوئے انہوں نے وہاں کی آزاد ملک پالیسی کو بھی سراہا۔

      عمران خان نے مزید کہا، ‘ملک میں کھلے عام اراکین پارلیمنٹ کا خریدوفروخت ہو رہی ہے۔ سیریم کورٹ کو اسے دیکھنا چاہئے تھا۔ اپوزیشن کے لوگ بکے ہوئے ہیں‘۔
      عمران خان نے مزید کہا، ‘ملک میں کھلے عام اراکین پارلیمنٹ کا خریدوفروخت ہو رہی ہے۔ سیریم کورٹ کو اسے دیکھنا چاہئے تھا۔ اپوزیشن کے لوگ بکے ہوئے ہیں‘۔


      عمران خان نے امریکہ کی تنقید کی

      عمران خان نے دوبارہ امریکہ پر اپنی حکومت کو گرانے کا الزام لگایا۔ انہوں نے کہا، ’چار ماہ پہلے امریکہ نے سازش کرنی شروع کی۔ امریکہ نے ہمارے سفیر کو دھمکی دی۔ امریکہ نے مجھے ہٹانے کے لئے کہا تھا۔ میڈیا میں بھی پیسے چل رہے تھے۔ میڈیا کو شرم نہیں آئی۔ ہمیں دھیرے دھیرے باتیں پتہ چلیں۔ ہمیں پتہ چلا کہ امریکہ کے ڈپلومیٹ ہمارے لیڈران سے مل رہے ہیں۔

      یہ بھی پڑھیں۔

      دہشت گرد حافظ سعید کو 31 سال کی جیل، Pakistan اینٹی ٹیرر کورٹ نے دی سزا

      عمران خان نے کہا، میں کسی کی کٹھ پتلی نہیں

      عمران خان نے کہا، ‘ہماری حکومت گرانے کی پوری منصوبہ بندی ہوئی تھی۔ میرا قصور یہ ہے کہ مجھے باہر سے پیسے سے کنٹرول نہیں کرسکتے، لیکن میں کسی کی کٹھ پتلی نہیں بن سکتا۔ میرا کوئی چوری کا پیسہ ملکی بینکوں میں نہیں۔ اپوزیشن پیسے ے لئے ملک کی قربانی دینے کے لئے تیار ہے‘۔ انہوں نے اپوزیشن اور اقتدار مخالف طاقتوں کو چیلنج دیتے ہوئے کہا کہ ‘میں عوام کے درمیان رہا ہوں اور رہوں گا۔ اس لئے الیکشن کرائیں اور فیصلہ کرالیں‘۔ عمران خان نے کہا کہ ملک کی سپریم کورٹ کے اس فیصلے کے ایک دن بعد ملک کو خطاب کر رہے ہیں، جس میں ان سے اپنے خلاف تحریک عدم اعتماد کا سامنا کرنے کو کہا گیا تھا۔

       

      9 اپریل کو تحریک عدم اعتماد پر ووٹنگ

      رپورٹ میں عمران خان کے حوالے سے کہا گیا، ‘ظاہر ہے، اپوزیشن کو لگتا ہے کہ وہ جیت گیا ہے، لیکن ایسا نہیں ہے۔ وہ ہار گئے ہیں‘۔ چودھری نے کہا، ‘کپتان (عمران خان) آج ایک اہم فیصلہ کریں گے۔ وہ ملک کو کبھی مایوس نہیں کریں گے‘۔ قابل ذکر ہے کہ عمران خان نے گزشتہ ہفتے قومی اسمبلی میں تحریک عدم اعتماد لائے جانے سے قبل ایوان میں اکثریت کھو دیا تھا۔ عمران خان کو ہفتہ کے روز قومی اسمبلی میں شکست ملنے کی امید ہے۔

       
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: