کشمیرترقی کی راہ پر گامزن، عمران خان حقیقت قبول کریں: ہرش وردھن شِرِنگلہ

ہرش وردھن شِرِنگلہ نے کہا کہ گذشتہ پانچ اگست کے بعد سے جب جموں و کشمیر سے متعلق دفعہ 370کو منسوخ کر دیا گیا تھا، ’حکومت ہند مزید ترقی یافتہ اور خوشحال کشمیر کی تعمیر کررہی ہے‘۔

Sep 21, 2019 09:01 AM IST | Updated on: Sep 21, 2019 09:02 AM IST
کشمیرترقی کی راہ پر گامزن، عمران خان حقیقت قبول کریں: ہرش وردھن شِرِنگلہ

عمران خان: فائل فوٹو

واشنگٹن۔ پاکستان کے وزیرا عظم عمران خان کے لیے یہ قبول کرنا مشکل امر ہے کہ کشمیر خطہ دوبارہ ترقی اور خوشحالی کی راہ پر گامزن ہے۔ ان خیالات کا اظہار امریکہ میں ہندوستانی سفیر ہرش وردھن شِرِنگلہ نے کیا۔ اس بات پر زور دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ گذشتہ پانچ اگست کے بعد سے جب جموں و کشمیر سے متعلق دفعہ 370کو منسوخ کر دیا گیا تھا، ’حکومت ہند مزید ترقی یافتہ اور خوشحال کشمیر کی تعمیر کررہی ہے‘۔

انہوں نے دی نیویارک ٹائمس میں شائع اپنے ایک مضمون میں لکھا،’ وزیر اعظم خان کے لیے یہ قبول کرنا کہ کشمیر خطہ دوبارہ ترقی اور خوشحالی کی راہ پر گامزن ہے اس لیے مشکل امرہے کیونکہ حکومت ہند نے اس فرسودہ اورعارضی التزام(دفعہ 370)کو غیر منسوخ کر دیا ہے جوترقی میں رکاوٹ بنا ہواتھا‘۔ شرنگلہ نے مزید لکھا،’ خان کے دوراقتدار میں پاکستانی عوام معاشی کساد بازاری، پانچ سال میں افراط زر کی سب سے اونچی سطح ، قومی قرض مجموعی گھریلو پیداوار(جی ڈی پی) سے زیادہ ہونااور 22ویں بار بین الاقوامی مالیاتی فنڈ(آئی ایم ایف)کےبیل آؤٹ جیسے متعدد مسائل سے دوچار ہیں‘۔

اس تناظر میں شِرِنگلہ نےطنزاً کہا،’ یقیناً عمران خان کو زمین پراپنی معیشت کو تباہ کرنے کا پورا حق ہے۔ لیکن ان کے ہمسایہ ملک کےایک صوبے میں بھی اسی طرح کا نقصان پہنچانے کی کوشش کی بین الاقوامی سطح پر مخالفت کی جانی چاہیے‘۔

انہوں نے کہا،’آئین کی دفعہ 370 حکومت ہند کومواصلاتی، مالیاتی، دفاعی اور خارجی امور کے علاوہ جموں وکشمیر کے معاملات میں کچھ بھی کہنے سے روکتی تھی جس سے صوبے کی مشکلات بڑھتی گئیں جہاں باقی ملک نے مضبوط سماجی اور معاشی میدان میں زبردست ترقی کی جموں و کشمیرمعاشی ترقی، نوکری،بدعنوانی کے خلاف لڑائی،  صنفی مساوات،تعلیمی اور کئی دیگر شعبوں میں پیچھے رہ گیا‘۔

Loading...

Loading...