உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    مالِ مفت دلِ بے رحم: سائیکل سے آفس جانے کا تھا عمران خان کا وعدہ ہیلی کاپٹر سے کرتے رہے سفر،ہر دن خرچ کیے 8لاکھ روپے

    عمران خان نے گزاری عیش و عشرت بھری زندگی۔

    عمران خان نے گزاری عیش و عشرت بھری زندگی۔

    فواد چوہدری جنہوں نے عمران حکومت میں وزارت اطلاعات اور قانون کا قلمدان سنبھالا، کہا کہ عمران کو دوسرے ممالک سے تحائف ملے تھے۔ ان کو بیچ دیا تو اس میں کیا حرج ہے؟ ویسے تو پاکستان کا آئین کہتا ہے- وزیراعظم یا کسی بھی سرکاری اہلکار کو ملنے والے تحائف ملک کی ملکیت ہیں۔

    • Share this:
      اسلام آباد: عمران خان اب پاکستان کے وزیراعظم نہیں رہے۔ ان کی کرسی چلی گئی ہے۔ خان نے لوگوں کو بڑے خواب دکھائے تھے۔ ریاست ِمدینہ کا وعدہ کیا تھا لیکن اب اقتدار سے محرومی کے بعد ان کی ہر حقیقت سامنے آرہی ہے۔ پاکستان کی وزارت اطلاعات کے مطابق عمران خان اپنے پرتعیش اور کثیر ایکڑ گھر (بنی گالہ) سے پی ایم ہاؤس تک ہیلی کاپٹر کے ذریعے سفر کرتے تھے۔ 15 کلومیٹر کا فاصلہ طے کرنے کے لیے، خان ہر روز 8 لاکھ روپے (پاکستانی کرنسی) کے غریب ملک کے خزانے کو چونا لگاتے رہے۔

      وعدہ تو سائیکل سے جانے کا تھا
      مزے کی بات یہ ہے کہ اگست 2018 میں جب عمران وزیر اعظم بنے تو انہوں نے کہا تھا کہ میری حکومت کے پاس خزانہ خالی ہے۔ ہم سرکاری اخراجات میں کمی کریں گے۔ میں سائیکل سے آفس جاؤں گا۔ میرے وزراء کے ساتھ سیکیورٹی کا کوئی عنصر نہیں ہوگا۔ گورنر ہاؤس کو یونیورسٹی میں تبدیل کیا جائے گا۔ تمام سرکاری گاڑیاں فروخت کر دی جائیں گی۔ ہر وزیر صرف پرائیویٹ گاڑی استعمال کرے گا۔

      اور ہوا کیا؟
      وزیر اعظم ہاؤس کی تمام گائیں، بھینسیں اور گاڑیاں فروخت ہو گئیں۔ ان کی جگہ نئی اور لگژری گاڑیاں خریدی گئیں۔ حکومتی اخراجات کے تمام ریکارڈ ٹوٹ گئے۔ عمران کے دور میں نہ کوئی اسکول کھلا نہ یونیورسٹی۔ دلچسپ بات یہ ہے کہ پشاور اور کوئٹہ کی دو یونیورسٹیاں بند کر دی گئیں۔ توشہ خانہ (سرکاری خزانہ یاٹریژری) میں دوسرے ممالک سے ملنے والے تمام تحائف فروخت کیے جاتے تھے۔ اس کی تحقیقات بہت تیزی سے جاری ہیں۔

      ان کے خاص دوست فواد چوہدری جنہوں نے عمران حکومت میں وزارت اطلاعات اور قانون کا قلمدان سنبھالا، کہا کہ عمران کو دوسرے ممالک سے تحائف ملے تھے۔ ان کو بیچ دیا تو اس میں کیا حرج ہے؟ ویسے تو پاکستان کا آئین کہتا ہے- وزیراعظم یا کسی بھی سرکاری اہلکار کو ملنے والے تحائف ملک کی ملکیت ہیں۔

      یہ بھی پڑھیں:
      پاکستان جاکر پڑھائی نہ کریں ہندوستانی طلبا، ورنہ ... UGC اور AICTE نے جاری کی وارننگ

      عیش و آرام میں مشغول رہے عمران خان!
      شہباز شریف کی حکومت میں وزارت اطلاعات کی ذمہ داری تیز طرار مریم اورنگزیب کو سونپی گئی ہے۔ سینئر صحافی رضوان رضی اور اسد علی طور نے عمران کی گھریلو سفری تاریخ کے بارے میں معلومات حاصل کیں۔ اس کے مطابق عمران بنی گالہ سے پی ایم ہاؤس میں اپنے دفتر آنے اور جانے کے لیے سرکاری ہیلی کاپٹر کا استعمال کرتے تھے۔

      یہ بھی پڑھیں:
      Hajj 2022:اس سال حج پر جاپائیں گے ہندوستانی عازمین، 79ہزار 237 کا کوٹہ طئے


      • اس کے ایندھن اور دیکھ بھال پر روزانہ 8 لاکھ روپے خرچ ہوتے تھے۔

      • بنی گالہ سے پی ایم ہاؤس کا فاصلہ صرف 15 کلومیٹر ہے۔

      • ہر گھنٹے ایندھن کی قیمت پر 2 لاکھ 75 ہزار روپے خرچ ہوئے۔

      • کل اخراجات کا تخمینہ تقریباً ایک ارب پاکستانی روپے ہے۔

      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: