اپنا ضلع منتخب کریں۔

    عمران خان نے قتل کی سازش میں شامل دوسرے عہدیدار کے نام کا انکشاف کرنے کی دی دھمکی

    عمران خان نے قتل کی سازش میں شامل دوسرے عہدیدار کے نام کا انکشاف کرنے کی دی دھمکی

    عمران خان نے قتل کی سازش میں شامل دوسرے عہدیدار کے نام کا انکشاف کرنے کی دی دھمکی

    گولی لگنے کے بعد شوکت خانم اسپتال میں عمران خان کی سرجری ہوئی۔ انہیں گزشتہ اتوار کو اسپتال سے چھٹی دے دی گئی اور انہیں لاہور میں ان کے جمن پارک واقع قیام گاہ پر لے جایا گیا۔ ڈاکٹروں نے انہیں چار سے چھ ہفتے تک آرام کرنے کی صلاح دی ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Islamabad
    • Share this:
      پاکستان کے سابق وزیراعظم عمران خان نے اپنے اوپر ہوئے حملے کے معاملے میں دوسرے فوجی عہدیدار کے نام کا انکشاف کرنے کی دھمکی دی۔ انہوں نے دعویٰ کیا کہ دوسرے فوجی عہدیدار نے میجر جنرل فیصل نصیر کے ساتھ مل کر کنٹرول روم سے ان پر حملہ کرنے کے منصوبے کی نگرانی کی تھی۔

      غورطلب ہے کہ 70 سالہ خان پر جمعرات کو صوبہ پنجاب کے وزیرآباد میں وزیراعظم شہباز شریف کی حکومت کے خلاف لانگ مارچ کے دوران حملہ ہوا تھا، جس میں ان کے داہنے پیر میں گولیاں لگی تھیں۔ سابق وزیراعظم خان نے الزام لگایا تھا کہ وزیراعظم شہباز شریف، وزیرداخلہ رانا ثنا اللہ اور میجر جنرل فیصل نصیر ان کے قتل کی بھیانک سازش میں شامل تھے، اسی طرح پنجاب کے سابق گورنر سلمان تاثیر کا 2011 میں ایک مذہبی کٹروادی نے قتل کردیا تھا۔

      عمران خان نے ٹوئٹ کر کے کہا کہ میں دوسرے عہدیدار کے نام کا بھی انکشاف کروں گا جو تین نومبر کو دوپہر 12 بجے سے شام 5 بجے تک میجر جنرل فیصل نصیر کے ساتھ سازش کو انجام دئیے جانے کی نگرانی کررہا تھا۔ نصیر انٹر سروسز انٹلیجنس (آئی ایس آئی) کے کاونٹر انٹلیجنس وِنگ کے چیف ہیں۔

      خان نے کہا کہ میں نے تقریباً دو مہینے پہلے میرے خلاف رچی گئی قتل کی سازش کا پتہ لگالیا تھا اور 24 ستمبر کو آر وائی کے (رحیم یار خان) اور سات اکتوبر کو میاں والی میں عوامی ریلیوں میں اس کا پردہ فاش کیا تھا۔ وزیرآباد میں میرے قتل کی کوشش اسی اسٹوری پر عمل تھا۔

      یہ بھی پڑھیں:
      سیاسی صورتحال پر پاکستان کے اعلیٰ فوجی دستوں کی رائے منقسم! نئے آرمی چیف کا انتخاب....

      یہ بھی پڑھیں:
      ’سارے جہاں میں دھوم ہماری زباں کی ہے‘ آج دنیا بھر میں عالمی یوم اردو کا اہتمام، آخرکیوں..؟

      گولی لگنے کے بعد شوکت خانم اسپتال میں عمران خان کی سرجری ہوئی۔ انہیں گزشتہ اتوار کو اسپتال سے چھٹی دے دی گئی اور انہیں لاہور میں ان کے جمن پارک واقع قیام گاہ پر لے جایا گیا۔ ڈاکٹروں نے انہیں چار سے چھ ہفتے تک آرام کرنے کی صلاح دی ہے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: