உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    عمران کی چاہت:پاک کے وزیراعظم نے کہا-مودی کےساتھ TV ڈیبیٹ کرنا چاہتا ہوں، اس سے دونوں ملکوں کے کروڑوں لوگوں کو ہوگا فائدہ

    پاکستان کے وزیراعظم عمران خان نے کی خواہش، پی ایم مودی سے کرنا چاہتے ہیں مباحثہ۔

    پاکستان کے وزیراعظم عمران خان نے کی خواہش، پی ایم مودی سے کرنا چاہتے ہیں مباحثہ۔

    عمران کے مطابق جنوبی ایشیا میں کاروبار کے حوالے سے پاکستان کے پاس بہت کم آپشنز ہیں۔ ویسے عمران کا یہ بیان وقت کا تقاضا بھی ہے۔ دراصل، پاکستان FATF کی گرے لسٹ میں ہے۔ اس کا اجلاس پیرس میں جاری ہے۔

    • Share this:
      اسلام آباد:پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان بدھ کو روس کے دورے پر روانہ ہو رہے ہیں۔ اس سے پہلے انہوں نے روس کے ایک ٹی وی چینل کو انٹرویو دیا۔ کہا- میں ہندوستان کے وزیر اعظم نریندر مودی کے ساتھ ٹی وی پر بحث کرنا چاہتا ہوں۔ اس سے دونوں ممالک کے درمیان تعلقات پر اچھی بحث ہو سکے گی اور ہم بات چیت کے ذریعے بہت سے مسائل کا حل تلاش کر سکیں گے۔ اس سے ہندوستان اور پاکستان کے کروڑوں لوگوں کو فائدہ ہوگا۔ عمران کا دورہ روس ایک ایسے وقت میں ہو رہا ہے جب روس اور یوکرین کے درمیان بالکل جنگ کا ماحول ہے۔ روس نے یوکرین کے دو صوبوں (لوہانسک-ڈونٹسک) کو الگ الگ ملک قرار دے دیا ہے۔ امریکہ اور مغربی ممالک روس کے خلاف سخت اقدامات کر رہے ہیں۔

      نظر روس پر اور ذکر ہندوستان کا
      تقریباً 22 سال بعد پاکستان کا کوئی وزیراعظم روس کا دورہ کرنے جا رہا ہے۔ اس سے پہلے عمران گزشتہ مہینے چین بھی گئے تھے۔ چین اور روس کے اچھے تعلقات ہیں لیکن امریکہ اور مغربی ممالک ان دونوں ممالک سے ناراض ہیں۔ تاہم، اپنے دورہ روس سے قبل ایک رسمی انٹرویو میں خان نے ہندوستان اور وزیر اعظم مودی کا بھی ذکر کیا۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا- میں چاہوں گا کہ وزیر اعظم مودی ٹی وی پر مجھ سے بحث کریں۔ اگر ہم مسائل کو بات چیت کے ذریعے حل کر سکتے ہیں تو اس سے برصغیر اور دونوں ممالک کے کروڑوں لوگوں کو فائدہ ہوگا۔

      پاکستان کی مجبوری
      عمران کے مطابق جنوبی ایشیا میں کاروبار کے حوالے سے پاکستان کے پاس بہت کم آپشنز ہیں۔ ویسے عمران کا یہ بیان وقت کا تقاضا بھی ہے۔ دراصل، پاکستان FATF کی گرے لسٹ میں ہے۔ اس کا اجلاس پیرس میں جاری ہے۔ خیال کیا جاتا ہے کہ اس کا گرے لسٹ سے نکلنا مشکل ہے۔ ایف اے ٹی ایف دہشت گردی کی فنڈنگ ​​اور منی لانڈرنگ کو روکنے میں پاکستان کی پیش رفت کا جائزہ لے رہا ہے۔ خیال کیا جا رہا ہے کہ پاکستان کی قسمت کا فیصلہ 24 فروری کو ہوگا۔ پیرس میں قائم واچ ڈاگ نے پاکستان کو 2018 میں انسداد منی لانڈرنگ اور دہشت گردی کے لیے فنڈز اکٹھا کرنے جیسے معاملات پر گرے لسٹ میں رکھا تھا۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: