உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    EXCLUSIVE: پاکستان میں سیاسی طوفان، وزیراعظم عمران خان کہاں کھڑے ہیں؟ کونسامعاہدہ ہوا؟

    Youtube Video

    ذرائع نے بتایا کہ عمران خان وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان احمد خان بزدار سے 'فوری طور پر' مستعفی ہونے کو کہیں گے۔ بزدار کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ وہ خان کی پارٹی، اپوزیشن اور فوج میں غیر مقبول ہیں، جو وزیراعظم کے ساتھ سیاسی اتفاق رائے کی کمی کا اشارہ دے رہے ہیں۔

    • Share this:
      ذرائع نے CNN-News18 کو بتایا ہے کہ پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان بجٹ پیش کرنے کے بعد قبل از وقت انتخابات کا اعلان کر سکتے ہیں۔ اس میں یہ بھی بتایا گیا ہے کہ یہ ایک احتیاط سے طے شدہ ایک معاہدہ ہے۔ جس کا مقصد ناراض حزب اختلاف اور موجودہ حکومت دونوں کو مطمئن کرنا ہے۔ سی این این نیوز 18 کو ذرائع نے بتایا کہ پاکستان سیاسی بحران کا شکار ہے کیونکہ اسے بار بار آنے والے معاشی بحران کا سامنا ہے اور خان کی حکومت ملک کے کم ہوتے ہوئے غیر ملکی کرنسی کے ذخائر کو کم کرنے کے لیے 6 بلین ڈالر کے امدادی پیکج کی اگلی قسط جاری کرنے کے لیے بین الاقوامی مالیاتی فنڈ پر انحصار کر رہی ہے۔

      پاکستان کی قومی کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان عمران خان نے 2018 میں اقتدار سنبھالا جب ملک کی دو مرکزی دھارے کی جماعتوں کے رہنماؤں کو بدعنوانی کے الزامات سے بدنام کیا گیا۔ سیاسی تجزیہ کاروں کے مطابق ملک کی طاقتور فوج نے خان کے اقتدار میں آنے کی حمایت کی تھی لیکن اب جنرل ان کی قیادت سے غیر مطمئن ہو گئے ہیں۔

      عمران خان نے فوجی حمایت حاصل کرنے سے انکار کیا ہے۔ ذرائع نے بتایا کہ عمران خان اتوار کو شام 4 بجے اسلام آباد میں ایک بہت متوقع ریلی سے خطاب کرنے والے ہیں۔ حکومت اور اپوزیشن کے لیے جیت کی صورت حال کے لیے تمام اداروں کے ساتھ شائستہ رہنا بتایا گیا ہے۔ اس سے قبل CNN-News18 نے پہلے اطلاع دی تھی کہ قائد عوامی اجتماع میں استعفیٰ بھی دے سکتے ہیں۔ تاہم خان نے بارہا ایسے کسی بھی اقدام کی تردید کی ہے اور اس بات کا اعادہ کیا ہے کہ وہ اپنے عہدے پر رہیں گے۔

      مزید پڑھیں: Unique Love Story: نوے سال کے دادا نے کی 92 سال کی دادی سے شادی، 37 سال تک رہے لیو ان میں....

      یہ ریلی خان کے خلاف تحریک عدم اعتماد سے پہلے ہے، جو پیر کو پیش کی جائے گی، جس کے بعد اصل ووٹنگ سے پہلے سات دن کی بحث ہونی چاہیے۔ حالیہ ہفتوں میں 20 سے زیادہ قانون سازوں نے خان کو چھوڑ دیا ہے، جس سے وہ پارلیمنٹ میں سادہ اکثریت کے لیے درکار 172 ارکان سے کم رہ گئے ہیں۔

      مزید پڑھیں: Unique Love Story: نوے سال کے دادا نے کی 92 سال کی دادی سے شادی، 37 سال تک رہے لیو ان میں....

      سیاسی تجزیہ کاروں نے پیش گوئی کی ہے کہ خان کے حامی ویک اینڈ کا استعمال کچھ منحرف افراد کو پارٹی میں دوبارہ شامل ہونے کے لیے قائل کرنے کے لیے کریں گے۔ عدم اعتماد کی تحریک کے دوران خان کے خلاف ووٹ دینے کی دھمکی دینے والے اختلافی قانون سازوں کی نااہلی کے بارے میں آئینی نکتہ (آرٹیکل 63-A کی تشریح) پر سپریم کورٹ سے وضاحت طلب کرنے پر عدالت عظمیٰ کو بھی صدارتی فیصلے کو مسترد کرنا پڑے گا۔

      ذرائع نے بتایا کہ عمران خان وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان احمد خان بزدار سے 'فوری طور پر' مستعفی ہونے کو کہیں گے۔ بزدار کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ وہ خان کی پارٹی، اپوزیشن اور فوج میں غیر مقبول ہیں، جو وزیراعظم کے ساتھ سیاسی اتفاق رائے کی کمی کا اشارہ دے رہے ہیں۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: