உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Russia - Ukraine War: یوکرین میں تنازعہ کو روکنے ثالثی کی کوششیں تیزتر، اقوام متحدہ ہندوستان کےساتھ رابطے میں

    Youtube Video

    اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل انتونیو گوٹیرس (Antonio Guterres) نے نامہ نگاروں کو بتایا کہ میں اس جنگ کے خاتمے کے لیے ثالثی کی کوششوں کے سلسلے میں چین، فرانس، جرمنی، ہندوستان، اسرائیل اور ترکی سمیت کئی ممالک کے ساتھ قریبی رابطے میں ہوں۔

    • Share this:
      یوکرین میں جنگ کو ختم کرنے کی کوشش میں اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل انتونیو گوٹیرس (Antonio Guterres) نے کہا کہ وہ یوکرین میں تنازعہ کو روکنے کے لیے ثالثی کی کوششوں پر ہندوستان اور دیگر مختلف ممالک کے ساتھ قریبی رابطے میں ہیں۔ انھوں نے اپنی تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ یوکرین جل رہا ہے اور دنیا کی نظروں کے سامنے قوم کو برباد کیا جا رہا ہے، گوٹیریس نے زور دے کر کہا کہ اب وقت آگیا ہے کہ یوکرین کے عوام پر پھیلائی جانے والی ہولناکی کو روکا جائے اور سفارت کاری کی راہ پر گامزن ہوں۔

      اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل انتونیو گوٹیرس (Antonio Guterres) نے نامہ نگاروں کو بتایا کہ میں اس جنگ کے خاتمے کے لیے ثالثی کی کوششوں کے سلسلے میں چین، فرانس، جرمنی، ہندوستان، اسرائیل اور ترکی سمیت کئی ممالک کے ساتھ قریبی رابطے میں ہوں۔ امن کی اپیلوں کو سنا جانا چاہیے۔ یہ سانحہ رک جانا چاہیے۔ سفارت کاری اور بات چیت میں کبھی دیر نہیں ہوتی۔ ہمیں دشمنی کے فوری خاتمے اور اقوام متحدہ کے چارٹر اور بین الاقوامی قانون کے اصولوں پر مبنی سنجیدہ مذاکرات کی ضرورت ہے۔

      گٹیرس نے کہا کہ بے حساب بے گناہ افراد - بشمول خواتین اور بچے - مارے گئے ہیں۔ روسی افواج کے حملے کے بعد سڑکیں، ہوائی اڈے اور اسکول کھنڈرات میں تبدیل ہوگئے ہیں۔ ڈبلیو ایچ او کے مطابق کم از کم 24 صحت کی سہولیات کو حملے کا سامنا کرنا پڑا ہے۔ دریں اثنا روس اور یوکرین کے درمیان پیر کو شروع ہونے والے مذاکرات کا چوتھا دور روک دیا گیا ہے۔

      مزید پڑھیں: Russia - Ukraine War: روس ۔ یوکرین کے درمیان براہ راست مذاکرات کا مطالبہ، ’دہلی ماسکو اور کیف کے ساتھ رابطے میں ہے‘

      کل پھر دونوں ممالک کے وفود ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعے ایک ساتھ بیٹھیں گے۔ یوکرین کے صدر ولادیمیر زیلنسکی نے کہا کہ وہ اسرائیل میں روسی صدر ولادیمیر پوٹن کے ساتھ بات چیت کے لیے تیار ہیں۔ تاہم انھوں نے کہا کہ یہ مذاکرات جنگ بندی کے اعلان کے بعد ہی ہو سکتے ہیں، جیسا کہ خبر رساں ادارے دی کیو انڈیپنڈنٹ نے نقل کیا ہے۔



      چونکہ یوکرین میں لوگوں کی ایک بڑی تعداد کو بھوک اور پانی اور ادویات کی رسد میں کمی کا سامنا ہے اور 1.9 ملین سے کم افراد ملک کے اندر بے گھر ہیں، گوٹیرس نے متنبہ کیا کہ تنازعہ کی ایک اور جہت بھی ہے جو مبہم ہے۔ اس پر انہوں نے کہا کہ یہ جنگ یوکرین سے بہت آگے ہے۔ یہ دنیا کے سب سے زیادہ کمزور لوگوں اور ممالک پر بھی حملہ ہے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: