صومالیہ : سلامتی دستہ نے وزیر کو ہی دہشت گرد سمجھ ماری گولی ، عباس عبداللہ شیخ سراجی کی موت

صومالیہ کے دارالحکومت موغادیشو میں سلامتی دستہ نے ایک وزیر کو دہشت گرد سمجھ کر ان کی گاڑی پر گولی چلا دی، جس سے ان کی موت ہو گئی۔

May 04, 2017 09:07 AM IST | Updated on: May 04, 2017 09:07 AM IST
صومالیہ : سلامتی دستہ نے وزیر کو ہی دہشت گرد سمجھ  ماری گولی ، عباس عبداللہ شیخ سراجی کی موت

موغادیشو : صومالیہ کے دارالحکومت موغادیشو میں سلامتی دستہ نے ایک وزیر کو دہشت گرد سمجھ کر ان کی گاڑی پر گولی چلا دی، جس سے ان کی موت ہو گئی۔  موغادیشو کے میئر کے ترجمان عبدالفتح عمر ہیلن نے بتایا کہ عوامی امور کے وزیر اور ایم پی عباس عبداللہ شیخ سراجي کی گاڑی پر کل سلامتی دستہ نے دہشت گرد سمجھ کر غلطی سے گولی چلا دی، جس سے ان کی موت ہو گئی۔ خدا ان کی روح کو سکون بخشے۔

پولس میجر جنرل نورحسین نے رائٹر کو بتایا کہ معمول کی گشت کے دوران سلامتی دستہ نے سڑک پر ایک گاڑی کو روكا اور گاڑی کو دہشت گرد واقعہ کیلئے استعمال کئے جانے کے شبہ میں فائرنگ کر دی، جس سے کار میں سوار وزیر کی موت ہو گئی۔

قابل ذکر ہے کہ القاعدہ سے وابستہ جنگجو تنظیم الشباب آئے دن موغادیشو میں دہشت گردانہ واقعات کو انجام دیتی رہتی ہے اور افریقی یونین کے امن بردارفوج کو اس ملک سے باہر کرنے کی کوشش میں سرگرم ہے جس کی وجہ سے یہاں سیکورٹی کے نظام کی حالت کافی بگڑ گئی ہے اور ملک میں بدامنی کا ماحول ہے۔

Loading...

Loading...