ہوم » نیوز » عالمی منظر

ایل اے سی پر پُرتشدد جھڑپ کے بعد حالات کشیدہ، میجر جنرل سطح کی بات چیت جاری

گلوان وادی میں پُرتشدد جھڑپ کے بعد دونوں ممالک کی طرف سے بات چیت کا دور جاری ہے۔ نیوز ایجنسی اے این آئی کے مطابق، کچھ دیر میجر جنرل سطح کی بات چیت دوبارہ شروع ہوگی۔

  • Share this:
ایل اے سی پر پُرتشدد جھڑپ کے بعد حالات کشیدہ، میجر جنرل سطح کی بات چیت جاری
ایل اے سی پر پُرتشدد جھڑپ کے بعد حالات کشیدہ

نئی دہلی: گلوان وادی میں پُرتشدد جھڑپ کے بعد دونوں ممالک کی طرف سے بات چیت کا دور جاری ہے۔ نیوز ایجنسی اے این آئی کے مطابق، کچھ دیر میجر جنرل سطح کی بات چیت دوبارہ شروع ہوگی۔ وہیں دوسری طرف چین کے ساتھ ایل اے سی پر جاری تنازعہ کے درمیان بھارتیہ جنتا پارٹی نے فی الحال اپنے سبھی سیاسی پروگرام ملتوی کردیئے ہیں۔ قومی صدر جے پی نڈا نے کہا، ’20 جوانوں کی شہادت کو ہمارا ملک کبھی نہیں بھولے گا۔ ہم شہیدوں کو سلام پیش کرتے ہیں۔




چین نے ایک بار پھر حماقت دکھاتے ہوئے گلوان وادی پر دیر رات اپنا دعویٰ پیش کیا۔ ہندوستان نے اس دعوے کا زبردست جواب دیا ہے۔ وزارت خارجہ (MEA) نے کہا کہ دونوں ممالک کے درمیان 6 جون کو کئی کمانڈر سطح کی بات چیت میں بارڈر پر ذمہ داری کے ساتھ حالات سنبھالنے پر سمجھوتہ ہوا تھا، لیکن اس طرح کے بڑھا چڑھا کر کئے گئے غیر مستحکم دعوے اس سمجھوتے کے بالکل الٹ ہے۔

مشرقی لداخ (Ladakh) کی گلوان وادی (Galwan Valley) میں ہندوستان - چین کے فوجیوں کے درمیان ہوئے جھڑپ (India-China Rift) کے بعد اب دونوں ممالک کی افواج پیچھے ہٹ گئی ہیں۔ دوسری طرف چین نے کہا ہے کہ وہ ہندوستان کے ساتھ تنازعہ یا تشدد جھڑپ جیسی حالت نہیں چاہتا ہے۔ حالانکہ چین نے پھر الزام لگایا ہے کہ ہندوستانی فوج (Indian Army) کے جارحانہ رویے کے بعد پیر دیر رات فوجیوں میں پُرتشدد جھڑپ ہوگئی تھی۔ واضح رہے کہ اس جھڑپ میں ہندوستان کے 20 فوجی شہید ہوگئے تھے جبکہ چین کے بھی 43 فوجی ہلاک ہوئے تھے۔

اس سے قبل راہل گاندھی نے ٹوئٹر پر ایک 18 سیکنڈ کا ویڈیو جاری کرکے مودی حکومت سے سوال کئے تھے۔ انہوں نے کہا، ’چین نے ہندوستان کے نہتے فوجیوں کا قتل کرکے ایک بہت بڑا جرم کیا ہے۔ میں پوچھنا چاہتا ہوں کہ ان بہادروں کو بغر ہتھیار خطرے کی طرف کس نے بھیجا اور کیوں بھیجا، کون ذمہ دار ہے؟



وہیں امریکہ کی مشہور ویب سائٹ سی این این نے اپنی رپورٹ میں کہا ہے کہ اگر جنگ ہوا تو ہندوستان کا پلڑا بھاری رہ سکتا ہے۔ رپورٹ میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ 1962 سے لے کر اب کے حالات بدل گئے ہیں۔ اب ہندوستان کی طاقت بہت بڑھ گئی ہے۔
First published: Jun 18, 2020 02:57 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading