ہوم » نیوز » عالمی منظر

India China Faceoff: ایل اے سی پر کشیدگی کم کرنے کے لئے ہندستان۔ چین کے درمیان ان نکات پر بنی رضامندی

دونوں رہنماوں کی ملاقات پر وزارت خارجہ نے بیان جاری کر بتایا کہ کچھ نکات پر رضامندی بنی ہے۔ وزیر خارجہ ایس جئے شنکر اور چینی وزیر خارجہ وانگ ای نے مانا کہ دونوں ملکوں کے رشتوں میں کسی اختلاف کے پیش نظر تنازعہ نہیں آنا چاہئے۔ اس کے ساتھ ہی ماسکو میں میٹنگ کے دوران دونوں رہنما سرحد پر امن اور ہم آہنگی بنائے رکھنے پر متفق ہوئے۔

  • Share this:
India China Faceoff: ایل اے سی پر کشیدگی کم کرنے کے لئے ہندستان۔ چین کے درمیان ان نکات پر بنی رضامندی
وزیر خارجہ ایس جئے شنکر اور ان کے چینی ہم منصب وانگ ای

نئی دہلی/ ماسکو۔ وزیر خارجہ ایس جئے شنکر (S Jaishankar)  اور ان کے چینی ہم منصب وانگ ای نے مشرقی لداخ (East Ladakh) میں لائن آف کنٹرول (LAC) پر طویل عرصے سے جاری تعطل کو ختم کرنے کے سلسلے میں ماسکو میں جمعرات کو بات چیت کی۔ دونوں رہنماوں کے بیچ یہ بات چیت مشرقی لداخ میں سرحد پر پیدا کشیدگی کی صورت حال اور دونوں ملکوں کے ذریعہ فوجی موجودگی بڑھائے جانے کے پس منظر میں ہوئی ہے۔ موصولہ اطلاعات کے مطابق، دونوں رہنماوں کے بیچ بات چیت رات آٹھ بجے( ہندستانی وقت کے مطابق) کے کچھ دیر بعد شروع ہوئی اور کم سے کم 2 گھنٹے تک چلی۔ بات چیت کا واحد ہدف سرحد پر کشیدگی کو کم کرنا اور تعطل کے مقام سے فوجیوں کی واپسی کا تھا۔



دونوں رہنماوں کی ملاقات پر وزارت خارجہ نے بیان جاری کر بتایا کہ کچھ نکات پر رضامندی بنی ہے۔ وزیر خارجہ ایس جئے شنکر اور چینی وزیر خارجہ وانگ ای (Wang Yi) نے مانا کہ دونوں ملکوں کے رشتوں میں کسی اختلاف کے پیش نظر تنازعہ نہیں آنا چاہئے۔ اس کے ساتھ ہی ماسکو میں میٹنگ کے دوران دونوں رہنما سرحد پر امن اور ہم آہنگی بنائے رکھنے پر متفق ہوئے۔
 وہیں، دن میں جئے شنکر اور وانگ نے آٹھ رکنی ایس سی او کے وزرائے خارجہ کی میٹنگ میں حصہ لیا تھا۔ دو طرفہ بات چیت سے پہلے دونوں کی ملاقات روس۔ ہندستان۔ چین کے وزرائے خارجہ کی میٹنگ میں بھی ہوئی تھی۔ جئے شنکر۔ وانگ کی بات چیت سے دو دن پہلے منگل کو ہندستانی فوج نے کہا تھا کہ چینی فوج نے ایک دن پہلے شام میں پینگونگ جھیل کے جنوبی ساحل پر واقع ایک ہندستانی چوکی کی طرف بڑھنے کی کوشش کی اور ہوا میں گولیاں چلائیں۔ ایل اے سی پر 45 سال کے وقفے میں گولی چلنے کا یہ پہلا واقعہ تھا۔

بعد میں روس کی وزارت خارجہ نے ایک بیان میں کہا کہ میٹنگ میں روس۔ چین اور ہندستان کے مابین سہ طرفہ تعاون اور بین الاقوامی اور علاقائی اہمیت کے امور پر احترام، دوستی اور اعتماد کے جذبہ کے ساتھ بات چیت ہوئی۔روس کے بیان کے مطابق ان لیڈروں نے تسلیم کیا کہ تینوں ممالک کے مابین تعاون اور احترام میں پیش رفت سے عالمی ترقی، امن او استحکام میں اضافہ ہوگا۔ ان تینوں وزرائے خارجہ نے یہ بھی مانا کہ کووڈ۔19عالمی وبا سے نپٹنے کے لئے مضبوط سائنسی اور صنعتی صلاحیت ایک اہم کردار ادا کرسکتی ہے۔
Published by: Nadeem Ahmad
First published: Sep 11, 2020 08:32 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading