உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Ukraine: یوکرین کے زپوریزہیا نیوکلیئر پاور پلانٹ کے قریب گولہ باری! ہندوستان نے کیا تشویش کا اظہار!

    کمبوج نے ان مسائل پر روشنی ڈالی جن کا کئی ممالک کو سامنا ہے

    کمبوج نے ان مسائل پر روشنی ڈالی جن کا کئی ممالک کو سامنا ہے

    کمبوج نے کہا کہ ہندوستان دونوں ممالک پر زور دے رہا ہے کہ وہ فوری طور پر دشمنی ختم کریں اور بات چیت شروع کریں تاکہ سفارت کاری اور بات چیت کے راستے پر واپس آکر تشدد کو ختم کیا جا سکے۔

    • Share this:
      ہندوستان نے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل (UN Security Council) کی بریفنگ کے دوران یوکرین کے زپوریزہیا نیوکلیئر پاور پلانٹ (Zaporizhzhia Nuclear Power Plant) کے ایندھن ذخیرہ کرنے والے مقام قریب گولہ باری کی اطلاعات پر تشویش کا اظہار کیا۔ اقوام متحدہ میں ہندوستان کی مستقل نمائندہ روچیرا کمبوج نے کہا کہ ہندوستان زپوریزہیا نیوکلیئر پاور پلانٹ کے خرچ شدہ ایندھن ذخیرہ کرنے کی سہولت کے قریب گولہ باری کی اطلاعات پر اپنی تشویش کا اظہار کرتا ہے۔ ہم باہمی تحمل کا مطالبہ کرتے ہیں تاکہ جوہری تنصیبات کی حفاظت اور سلامتی کو خطرہ نہ ہو۔

      یوکرین اور روس نے جوہری پلانٹ کے قریب گولہ باری کا الزام ایک دوسرے پر عائد کیا۔ یوکرین نے جمعرات کو ایک بیان جاری کرتے ہوئے روس پر الزام لگایا کہ اس دن ایک بار پھر زپوریزہیا نیوکلیئر پاور پلانٹ پر گولہ باری کی گئی۔

      ہم انٹرنیشنل اٹامک انرجی ایجنسی (International Atomic Energy Agency) کے ذریعہ اس کے تحفظات اور نگرانی کی سرگرمیوں کے اخراج کو اعلی ترجیح دیتے ہیں۔ اس کے قانون کے مطابق ایک مؤثر، غیر امتیازی پالیسی اختیار کی جائے اور ہم اس سلسلے میں ایجنسی کی کوششوں کی قدر کرتے ہیں۔ ہم نے یوکرین میں نیوکلیئر پاور سے دستیاب تازہ ترین معلومات کو نوٹ کیا ہے۔

      انہوں نے کہا کہ ہندوستان یوکرین کے نیوکلیئر پاور ری ایکٹروں اور تنصیبات کی حفاظت سے متعلق پیش رفت پر نظر رکھے ہوئے ہے۔ انہوں نے یہ بھی نشاندہی کی کہ ہندوستان جوہری تنصیبات کی حفاظت کو ترجیح دیتا ہے کیونکہ کوئی بھی حادثہ ماحولیاتی اور صحت عامہ کی حفاظت کو خطرے میں ڈال سکتا ہے۔

      کمبوج نے کہا کہ ہندوستان دونوں ممالک پر زور دے رہا ہے کہ وہ فوری طور پر دشمنی ختم کریں اور بات چیت شروع کریں تاکہ سفارت کاری اور بات چیت کے راستے پر واپس آکر تشدد کو ختم کیا جا سکے۔

      یہ بھی پڑھیں:


      ہندوستان نے کہا کہ یوکرین کی جنگ سے ترقی پذیر معیشتوں پر پڑنے والے اثرات پر غور کرنا ضروری ہے۔ کمبوج نے ان مسائل پر روشنی ڈالی جن کا کئی ممالک کو سامنا ہے کیونکہ جنگ کے اثرات خوراک، کھاد اور ایندھن کی سپلائی چین پر پڑ رہے ہیں۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: