اپنا ضلع منتخب کریں۔

    سری لنکا کی مالی اعانت اور قرضوں کی ادائیگی کا ہندوستان پرزور حامی، آئی ایم ایف کو لکھا خط

    وزیر خارجہ ایس جے شنکر (فائل فوٹو)

    وزیر خارجہ ایس جے شنکر (فائل فوٹو)

    آئی ایم ایف کو سپورٹ کے خط میں آئی ایم ایف کی منیجنگ ڈائریکٹر کرسٹالینا جارجیوا کو مخاطب کرتے ہوئے ہندوستان کی وزارت خزانہ نے سری لنکا کے قرضوں کی انتہائی غیر پائیدار صورتحال، قرضوں کی پائیداری کو بحال کرنے کے لیے قرض دہندگان کے ساتھ ملک کی مصروفیت کو تسلیم کیا اور کولمبو کی ممکنہ توسیع کے لیے اپنی مضبوط حمایت کی تصدیق کی۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Delhi, India
    • Share this:
      پیر کے روز ہندوستان پہلا ملک بن گیا جس نے سری لنکا کی مالی اعانت اور قرضوں کی تنظیم نو کے لیے اپنا خط بین الاقوامی مالیاتی فنڈ کے حوالے کیا، جس میں جزیرہ نما ملک سری لنکا کی اقتصادی بحالی کے لیے اس کی مسلسل حمایت کی علامت ہے۔ 2022 میں ہندوستان نے کولمبو کو اس کی سنگین معاشی صورتحال سے نمٹنے کے لیے 4.5 بلین ڈالر کی امداد فراہم کی۔

      توقع ہے کہ چین اتوار کو آئی ایم ایف کو اپنا تعاون کا خط سونپے گا۔ نئی دہلی نے 16 جنوری کو اپنا سپورٹ لیٹر آئی ایم ایف کے حوالے کیا، اس سے چار دن قبل وزیر خارجہ ایس جے شنکر 20 جنوری کو سری لنکا کی سیاسی قیادت سے ملاقات کے لیے کولمبو پہنچے تھے۔ سری لنکا کے رہنماؤں بشمول صدر رانیل وکرما سنگھے کے ساتھ اپنی ملاقاتوں کے دوران، جے شنکر نے واضح کیا کہ ضرورت کے وقت ہندوستان اپنے پڑوسی کے ساتھ کھڑا ہے اور ضرورت پڑنے پر اضافی میل تک جانے کے لیے تیار ہے۔ وزیر نے کہا کہ ان کا سری لنکا کا دورہ وزیر اعظم نریندر مودی کی پڑوسی پہلے کی پالیسی کا مظہر ہے۔

      آئی ایم ایف کو سپورٹ کے خط میں آئی ایم ایف کی منیجنگ ڈائریکٹر کرسٹالینا جارجیوا کو مخاطب کرتے ہوئے ہندوستان کی وزارت خزانہ نے سری لنکا کے قرضوں کی انتہائی غیر پائیدار صورتحال، قرضوں کی پائیداری کو بحال کرنے کے لیے قرض دہندگان کے ساتھ ملک کی مصروفیت کو تسلیم کیا اور کولمبو کی ممکنہ توسیع کے لیے اپنی مضبوط حمایت کی تصدیق کی۔

      نئی دہلی نے واضح کیا ہے کہ وہ سری لنکا کی مالی امداد/قرضوں میں ریلیف کے ساتھ ساتھ آئی ایم ایف کے تعاون یافتہ پروگرام کے تحت اس ملک کے عوامی قرضوں کی پائیداری کو بحال کرنے اور اس بات کو یقینی بنانے کے لیے پرعزم ہے کہ اس پروگرام کو مکمل طور پر مالی اعانت فراہم کی جائے جیسا کہ Bretton Woods Institution کی طرف سے پیش گوئی کی گئی ہے۔ مودی حکومت نے بتایا ہے کہ یہ فائنانسنگ/قرض میں ریلیف ایکسپورٹ امپورٹ بینک آف انڈیا فراہم کرے گا۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: