ہوم » نیوز » عالمی منظر

چین کی شہہ پر نیپال کو ہندوستان کے خلاف کر رہے وزیر اعظم اولی، بربادی کا انتباہ!

نیپال کی حکمراں اور اپوزیشن سیاسی پارٹیوں نے ہفتے کو نئے متنازعہ نقشے کو شامل کرتے ہوئے آئین کی تیسری شیڈول کو ترمیم کرنے سے متعلق سرکاری بل کے حق میں ووٹنگ کی

  • Share this:
چین کی شہہ پر نیپال کو ہندوستان کے خلاف کر رہے وزیر اعظم اولی، بربادی کا انتباہ!
نیپال کے وزیر اعظم اولی کی فائل فوٹو

کاٹھمانڈو۔ نیپال (Nepal)  کی میڈیا اور ماہرین نے اب وزیر اعظم کے پی اولی  (KP Oli) کے اقدامات پر سوال کھڑے کرنے شروع کر دئیے ہیں۔ ملک کے ماہرین اور سینئر صحافیوں نے اتوار کو وزیر اعظم کو انتباہ دیا کہ ملک کی قیادت میں اختلاف اور راشٹر واد کے نام پر ’ سستی مقبولیت‘ حاصل کرنے سے جڑے ان کے قدم نیپال کو بربادی کی طرف دھکیل دے سکتے ہیں۔ انہوں نے لکھا کہ سرحدی تنازعہ (India-Nepal Border Dispute) کے مستقل حل کے لئے نیپال اور ہندوستان کے پاس بات چیت کے علاوہ کوئی اور دوسرا متبادل نہیں ہے۔


نیپال کی حکمراں اور اپوزیشن سیاسی پارٹیوں نے ہفتے کو نئے متنازعہ نقشے کو شامل کرتے ہوئے آئین کی تیسری شیڈول کو ترمیم کرنے سے متعلق سرکاری بل کے حق میں ووٹنگ کی۔ اس کے تحت ہندوستان کے اتراکھنڈ میں واقع لیپولیکھ، کالاپانی اور لمپیادھرا کو نیپالی علاقہ کے طور پر دکھایا گیا ہے۔ ہندوستان نے اس قدم کی سخت مخالفت کرتے ہوئے اسے قبول کرنے کے لائق نہیں بتایا تھا۔ حالانکہ نیپال مسلسل سکریٹری سطح کی بات چیت کے لئے تجویز پیش کرتا رہا ہے لیکن ہندوستان نے واضح کر دیا ہے کہ اعتماد کا ماحول بنے بغیر فی الحال یہ کوئی متبادل نہیں ہے۔


چین کی شہہ پر اولی نے اٹھائے قدم!


سینئر صحافی پرہاد ریجل نے کہا ’ نیپال کے ذریعہ کالا پانی کو شامل کرتے ہوئے نقشے کو پھر سے تیار کرنا اور نمائندہ ایوان کے ذریعہ اسے پاس کرانا راشٹرواد کے نام پر کے پی اولی حکومت کے ’ سستی مقبولیت‘ حاصل کرنے کے قدم کو دکھاتا ہے جس کے نتیجے برعکس بھی ہو سکتے ہیں‘۔ ریجل نے وارننگ دی کہ اولی حکومت کے قدم سے ہندوستان اور نیپال کے درمیان زمین کو لے کر تنازعہ کھڑا ہو گیا ہے جو مہنگا ثابت ہو سکتا ہے۔ انہوں نے کہا ’ ایسی خبریں ہیں کہ اس قدم کو بیجنگ سے اشارہ ملنے کے بعد اٹھایا گیا ہے۔ یہ بدبختانہ ہے‘۔ انہوں نے نیپال کے سیاسی اور اقتصادی منظرنامہ میں چین کے بڑھتے رول کو لے کر بھی سخت تشویش ظاہر کی ہے۔

 
First published: Jun 15, 2020 08:22 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading