உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    کرتارپورکاریڈور: ہندوستان - پاکستان کے درمیان اس دن ہوسکتی ہے بات چیت

    وزارت خارجہ کی طرف سے پاکستان بھیجے گئے خط میں 11 جولائی سے 14 جولائی کے درمیان واگھہ بارڈر پربات چیت کی پیشکش کی گئی ہے۔ فائل فوٹو

    وزارت خارجہ کی طرف سے پاکستان بھیجے گئے خط میں 11 جولائی سے 14 جولائی کے درمیان واگھہ بارڈر پربات چیت کی پیشکش کی گئی ہے۔ فائل فوٹو

    کرتارپورکاریڈورکولےکرابھی تک دونوں ممالک کےدرمیان تین دورکی بات چیت ہوچکی ہے۔

    • Share this:
      ہندوستان نے کرتارپور کاریڈورپربات چیت کے لئے پاکستان کے سامنے نئی تاریخ کی تجویز رکھی ہے۔ وزارت خارجہ کی طرف پاکستان بھیجے خط میں 11 جولائی سے 14 جولائی کے درمیان واگھہ بارڈر پر بات چیت کی پیشکش کی گئی ہے۔ کرتارپور کاریڈور کولے کر ابھی تک دونوں ممالک کے درمیان تین دورکی بات چیت ہوچکی ہے۔

      کرتار پورکاریڈورکو لے کر بات چیت میں ملک کے زائرین (تیرتھ یاتریوں) کو کرتار پور گرودوارہ تک سیکورٹی اوران کے روٹ کولے کربھی بات چیت کی جائے گی۔ اس کے علاوہ تیرتھ یاتریوں کو دی جانے والی سہولیات پربھی بات ہوگی۔

      ہندوستان کا دعویٰ- 45 فیصد کام مکمل

      کرتار پورکاریڈورکو لے کرہندوستان نے دعویٰ کیا ہے کہ اب تک 45 فیصد کام پورا کیا جا چکا ہے، لیکن معاہدے کے مطابق پاکستان کی طرف سے طے شدہ وقت کے مطابق کام نہیں کیا جارہا ہے۔ پروجیکٹ کولٹکانے کی کوشش کی جارہی ہے۔ ہندوستانی حکومت کی اس پروجیکٹ کو 30 ستمبرتک پورا کرنے کا پلان ہے۔ ہندوستان چاہتا ہے کہ پاکستان اپنے حصے کی آل ویدرروڈ بنائے، لیکن پاکستان صرف سیزنل روڈ بنا رہا ہے۔

      ہندوستان نے اس کو لے کرپاکتان کے سامنے اعتراض ظاہر کیا ہے۔ آل ویدر روڈ پربن رہے برج کو ہندوستان طے ڈیڈ لائن کے تحت پورا کررہا ہے، لیکن پاکستان اپنے حصے کے برج کوبنانے کے لئے تیارنہیں ہے۔ ہندوستان کو لگتا ہے کہ یہ برج اگرنہیں بنے گا تو پنجاب کے کئی علاقوں میں سیلاب کے حالات پیدا ہوجائیں گے۔ ہندوستان چاہتا ہے کہ اس برج پرپاکستان جلد اپنا کام پورا کرے۔ اس کاریڈورکو لے کرپاکستان کے ساتھ چارمیٹنگیں ہوچکی ہیں۔ اس کے باوجود پاکستان طے شدہ بین الاقوامی معیارکے مطابق ہندوستان کوکوئی ٹھوس پلان نہیں دے سکا ہے۔

      پاکستان نے جاری کیا 100 کروڑ کا بجٹ

      پاکستان کی حکومت نے متوقع کرتار پورکی ترقی کے لئے بجٹ وفاقی 20-2019 میں 100 کروڑ روپئے جاری کئے ہیں۔ یہ گلیارہ پاکستان کے کرتارپور میں دربار صاحب کو ہندوستان کے گرداس پورضلع میں ڈیرا بابا نانک گرودوارے سے جوڑے گا۔ یہ کاریڈورہندوستانی سکھوں کوویزا کے بغیرآنے جانے کی آزادی دے گی۔ انہیں کرتار پورصاحب جانے کے لئے صرف ایک اجازت حاصل کرنی ہوگی۔
      First published: