کشمیرموضوع پرپاکستان کے بین الاقوامی عدالت میں جانے پرہندوستان کا جواب- جہاں جانا ہےجاو، وہیں دیں گے جواب

جموں وکشمیرسےدفعہ 370 ہٹائے جانےکے فیصلےکے خلاف پاکستان نے بین الاقوامی عدالت میں اپیل کرنےکا فیصلہ کیا تھا۔

Aug 21, 2019 06:47 PM IST | Updated on: Aug 21, 2019 06:52 PM IST
کشمیرموضوع پرپاکستان کے بین الاقوامی عدالت میں جانے پرہندوستان کا جواب- جہاں جانا ہےجاو، وہیں دیں گے جواب

ہندوستان نے پاکستان کی کشمیرموضوع پر بین الاقوامی عدالت جانےکی دھمکی پردو ٹوک جواب دیا ہے۔ فائل فوٹو

نریندرمودی حکومت نے جموں وکشمیرکا خصوصی درجہ آرٹیکل 370 ہٹاکرختم کردیا تھا۔ اس کے بعد سے پاکستان اس موضوع پرمسلسل بین الاقوامی برداری کی توجہ مرکوزکرنے کی کوشش کررہا تھا، لیکن اپنے ان کوششوں میں اسے بری طرح سے ناکامی ہاتھ لگی تھی، جس کے بعد پاکستان نےانٹرنیشنل کورٹ آف جسٹس (آئی سی جے) میں اس موضوع کو اٹھانےکی بات کہی تھی، لیکن ہندوستان نے پاکستان کی ان دھمکیوں کوبالکل اہمیت نہیں دی ہے۔

اقوام متحدہ میں ہندوستان کے مستقل نمائندہ سید اکبرالدین نے ایک چینل کو دیئے انٹرویو میں کہا ہےکہ ہرایک ملک کواس کے پاس دستیاب ہرایک راستوں کواپنانےکا اختیارہے۔ ہماری سوچ بھی الگ الگ ہیں، اگروہ ہم سے الگ الگ اکھاڑوں میں نمٹنا چاہتے ہیں توہم اسی اکھاڑے میں جواب دیں گے، یہ ان کی پسند کا اکھاڑہ ہے، انہوں نے ایک بارکوشش کی، لیکن وہ ناکام رہے۔

Loading...

سید اکبرالدین لے رہے تھے پاکستان کی چٹکی

دراصل ایک بارکی پاکستان کی ناکام کوشش کا ذکراکبرالدین، کلبھوشن جادھو کے ضمن میں کررہےتھے۔ یعنی اکبرالدین نے نہ صرف پاکستان کو ہندوستان کے ارادوں کے بارے میں بتایا بلکہ پاکستان کی جادھومعاملے میں ہوئی فضیحت پرچٹکی بھی لی ہے۔  دراصل جموں وکشمیرسے دفعہ 370 ہٹائے جانے کے فیصلے کے بعد آئی سی جے میں پاکستان کے اپیل کرنےکی بات پاکستان کے وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نےکہی تھی۔

شاہ محمود قریشی نے کہا تھا کہ ہم نے سبھی قانونی پہلوں کومد نظررکھتے ہوئےایسا کیا تھا۔ واضح رہے کہ اس سے قبل پاکستان، کشمیرکے موضوع پراقوام متحدہ کی سلامتی کونسل (یو این ایس سی) بھی جا چکا ہے، جہاں اسے کونسل کے اراکین نے بھی اہمیت نہیں دی تھی اور کشمیرمیں اٹھائےگئے ہندوستان کے قدم کودوطرفہ مسئلہ بتایا تھا۔

Loading...