உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ہندوستان کے سخت جواب سے بیک فٹ پر برطانیہ، ویکسین سرٹیفکیٹ پر بدلا مزاج

    ہندوستان کے سخت جواب سے بیک فٹ پر برطانیہ، ویکسین سرٹیفکیٹ پر بدلا مزاج

    ہندوستان کے سخت جواب سے بیک فٹ پر برطانیہ، ویکسین سرٹیفکیٹ پر بدلا مزاج

    مرکزی حکومت کے فیصلے پر برطانیہ کے ہائی کمیشن (British High Commission) نے بیان دیا ہے۔ ہائی کمیشن نے کہا ہے کہ ہم لوگ چاہتے ہیں کہ سفر جتنا ممکن ہو، اتنا آسان ہو۔ برطانیہ سفر کے لئے کھلا ہوا ہے اور سال 2021 میں اب تک 62500 لوگوں کو ویزا جاری ہو چکا ہے۔

    • Share this:
      نئی دہلی: برطانیہ (UK) سے ہندوستان آنے والوں پر سخت کورونا ضوابط نافذ کرنے کے مرکزی حکومت کے فیصلے پر برطانیہ کے ہائی کمیشن (British High Commission) نے بیان دیا ہے۔ ہائی کمیشن نے کہا ہے کہ ہم لوگ چاہتے ہیں کہ سفر جتنا ممکن ہو، اتنا آسان ہو۔ برطانیہ سفر کے لئے کھلا ہوا ہے اور سال 2021 میں اب تک 62500 لوگوں کو ویزا جاری ہو چکا ہے۔

      کمیشن نے کہا- برطانیہ اس پالیسی کی توسیع کے لئے پابند عہد طریقے سے پوری دنیا کی حکومتوں کے ساتھ مل کر کام کر رہا ہے۔ ہم لوگ ہندوستانی حکومت کے ساتھ بھی مسلسل تکنیکی تعاون پر بات چیت کر رہے ہیں، جس سے ہندوستان میں ٹیکہ کاری کروانے والوں کی سرٹیفکیٹ برطانیہ میں قبول ہو۔

      دراصل، برطانیہ کے ذریعہ کوون سرٹیفکیٹ کو منظوری نہ دینے کے موضوع پر ہندوستانی حکومت نے سخت رخ اختیار کرلیا ہے۔ اب برطانیہ سے ہندوستان آنے والوں کو بھی ویسے ہی ضوابط سے گزرنا ہوگا، جیسے برطانیہ نے لگائے ہیں۔ ذرائع کے مطابق، ملک میں نئے ضوابط 4 اکتوبر سے موثر ہوجائیں گے۔ برطانیہ بھی اپنے یہاں نئے ضوابط کو 4 اکتوبر سے ہی نافذ کر رہا ہے۔ ذرائع سے خبر ملی ہے کہ نئے ضوابط کے مطابق، ہندوستان آنے سے 72 گھنٹے پہلے آر ٹی پی سی آر ٹسٹ کرانا ہوگا۔ ایئرپورٹ پر پہنچنے پر بھی ٹسٹ کرانا ہوگا۔ آنے کے آٹھویں دن پھر آر ٹی پی سی آر ٹسٹ کرانا ہوگا۔ ساتھ ہی ہندوستان میں آنے کے بعد 10 دنوں تک کوارنٹائن میں رہنا لازمی ہوگا۔

      گزشتہ ہفتے کووی شیلڈ کو دی منظوری، لیکن کوون سرٹیفکیٹ کو نہیں
       گزشتہ ہفتے ہندوستان کی طرف سے سوال اٹھائے جانے کے بعد برطانیہ نے سفری ایڈوائزری میں تبدیلی کرتے ہوئے کووی شیلڈ کو منظوری دی گئی اور ویکسین کی فہرست میں شامل کرلیا تھا۔ حالانکہ، ہندوستانی مسافروں کے لئے برطانیہ کے سفر پر ابھی رکاوٹیں پوری طرح ختم نہیں ہوئیں۔ مسافروں کو برطانیہ پہنچنے کے بعد کووڈ کی جانچ کرانی ہوگی اور کوارنٹائن ضوابط پر عمل بھی کرنا ہوگا۔ کیونکہ ابھی تک ملک نے کوون سرٹیفکیٹ کو منظوری نہیں دی ہے۔ اس معاملے کو لے کر دونوں ممالک کے درمیان بات چیت چل رہی تھی۔

      ہندوستان درج کراتا رہا ہے مخالفت، بتایا امتیازی سلوک

      اسے لے کر ہندوستان کی طرف سے مخالفت درج کرائی گئی تھی۔ ہندوستان نے کہا تھا، ’کووی شیلڈ کو منظوری نہیں دینا امتیازی سلوک کی پالیسی ہے اور ہمارے مسافروں کے برطانیہ سفر کو متاثر کرے گی‘۔ وزیر خارجہ ایس جے شنکر نے بھی برطانیہ سے پوری طرح ٹیکہ کاری کراچکے ہندوستانیوں کے لئے کوارنٹائن ضوابط میں چھوٹ دینے کی اپیل کی تھی۔

      Published by:Nisar Ahmad
      First published: