ہوم » نیوز » عالمی منظر

بھیانک حادثہ! انڈونیشیا میں مال بردار جہاز، اور کشتی میں تصادم، 17 افراد لاپتہ

انڈونیشیا (Indonesia) کے مرکزی جزیرے جاوا کے ساحلی آبی علاقے میں مال بردار جہاز Cargo ship اور ماہی گیر کشتی کے مابین تصادم کے بعد 17 افراد لاپتہ (Missing) ہوگئےَ۔

  • Share this:
بھیانک حادثہ! انڈونیشیا میں مال بردار جہاز، اور کشتی میں تصادم،  17 افراد لاپتہ
انڈونیشیا (Indonesia) کے مرکزی جزیرے جاوا کے ساحلی آبی علاقے میں مال بردار جہاز Cargo ship اور ماہی گیر کشتی کے مابین تصادم کے بعد 17 افراد لاپتہ (Missing) ہوگئےَ۔

جکارتہ: انڈونیشیا (Indonesia) کے مرکزی جزیرے جاوا کے ساحلی آبی علاقے میں مال بردار جہاز Cargo ship اور ماہی گیر کشتی کے مابین تصادم کے بعد 17 افراد لاپتہ ہوگئے۔ اتوار کے روز سرچ اینڈ ریسکیو ایجنسی کے سربراہ دیدن ریداونسیا نے بتایا کہ ہفتے کے روز دیر رات انڈونیشیو ضلع کے ساحلی آبی کنارے پر ایک مچھلی پکڑنے والی کشتی نے انڈونیشیا کے کارگو جہاز 'ایم وی ہبکو پائیوینر' سے ٹکرانے کے بعد پلٹ گئی۔ اس کشتی میں 32 افراد سوار تھے۔

ڈائریکٹوریٹ جنرل آف اوشین ٹرانسپورٹ کے ترجمان نے بتایا ہے کہ کشتی میں سوار 15 افراد کو بچایا لیا گیا اور مقامی ماہی گیر اور بحریہ کے دیگر لوگوں کی تلاش کر رہے ہیں۔


سرچ اینڈ ریسکیو ایجنسی کے سربراہ دیدن ریداونسیا نے بتایا کہ بورنیو جزیرے سے خام تیل لیکر آ رہے ایک کارگو جہاز کو کھڑا کر دیا گیا ہے کیونکہ اس کا 'پروپیلر' مچھلی پکڑنے والے جال میں پھنس گیا۔

وہیں اس سے پہلے مصر کی سوئز نہر میں تقریباً ایک ہفتے تک پھنسے رہے مال بردار جہاز کو ہٹا دیا گیا ہے ، جس کے ساتھ ہی اس نہر میں جہازوں کی آمد و رفت دوبارہ شروع ہو گئی ہے۔ مصر ی صدر کے صلاح کار نے یہ اطلاع دی ہے ۔ جہاز کا نام ایم وی ایور گیون ہے ، جو تقریباً 400 میٹر لمبا اور 59 میٹر چوڑا تھا۔ یہ مال بردار جہاز چین سے نیدر لینڈ کی جانب جا رہا تھا ۔ گزشتہ ہفتے سوئز نہر میں اس جہاز کے پھنسنے سے کم از کم 367 جہاز پھنس گئے تھے۔ اب راستہ کھلنے سے یہ جہاز یہاں سے گزر سکیں گے۔

Suez Canal Logjam: سوئز نہر میں کئی دنوں سے پھنسا دیوہیکل بحری جہاز پھر تیرنے لگا : رپورٹ
ایم وی گیون جہاز دنیا کا سب سے بڑا مال بردار جہاز ہے۔ یہ چین سے نیدر لینڈ کے پورٹ روٹیرڈم جا رہا تھا۔ راستے میں سوئز نہر میں جہاز گھوم گیا اور پھنس گیا۔ اسی سبب نہر کا راستہ بلاک ہو گیا ۔ مصر کے افسران نے بتایا تھا کہ تیز ہوا کی وجہ سے جہاز گھوم گیا اور پھنس گیا تھا۔

کاروبار کےنقطۂ نظر سے سوئز نہر بڑی اہمیت کی حامل ہے ۔ اس نہر کو کاروبار کے لئے 1869 میں کھولا گیا تھا ۔ یہ نہر ایشیا کو یورپ سے اور یورپ کو ایشیا سے جوڑتی ہے ۔ پوری دنیا میں تیل کا جتنا کاروبار ہوتا ہے، اس کا سات فیصد اسی نہر کے ذریعہ سے کیا جاتا ہے ۔ وہیں عالمی بازار کا 10 فیصد کاروبار سوئز نہر ہی ہوتا ہے ۔
Published by: Sana Naeem
First published: Apr 04, 2021 08:14 PM IST