உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    PM Modi Italy Visit: پوپ فرانسس سے ملاقات کے بعد پی ایم مودی نے دی ہندستان آنے کی دعوت

    Youtube Video

    وزیراعظم نریندر مودی نے آج صبح یہاں ویٹیکن سٹی میں عیسائیوں کے سب سے بڑے مذہبی رہنما پوپ فرانسس (Pope Francis) سے نہایت گرمجوشی کے ساتھ ملاقات کی اور انہیں ہندستان کے دورہ کی دعوت دی۔

    • Share this:
      PM Modi Meeting with Pope Francis: اٹلی دورے پر ہفتے کو وزیر اعظم نریندر مودی نے ویٹیکن سٹی پہنچے۔ یہاں  وزیراعظم نریندر مودی نے آج صبح یہاں ویٹیکن سٹی میں عیسائیوں کے سب سے بڑے مذہبی رہنما پوپ فرانسس  (Pope Francis) سے نہایت گرمجوشی کے ساتھ ملاقات کی اور انہیں ہندستان کے دورہ کی دعوت دی۔ نریندر  مودی مقامی وقت کے مطابق تقریباً ساڑھے آٹھ بجے ویٹکین کے صحن میں پہنچے جہاں ویٹیکن کے سینئر حکام نے ان کا گرمجوشی کے ساتھ استقبال کیا۔ نریندر مودی کے ساتھ آئے وفد میں وزیر خارجہ ایس جے شنکر اور قومی سلامتی کے مشیر اجیت ڈوبھال بھی شامل تھے۔ بعد میں نریندر مودی نے جب پوپ سے ملاقات کی تو پوپ نے انہیں گلے لگا لیا۔ دونوں کے چہروں پر گہری قربت، باہمی احترام اور محبت کے جذبات نظر آرہے تھے۔
      نریندر مودی نے سب سے پہلے پوپ سے تنہائی میں ملاقات کی اور وفد کی سطح کی میٹنگ میں شامل ہوئے۔ روایت کے مطابق پوپ کے ساتھ ملاقات کا کوئی پہلے سے مقرر ایجنڈا نہیں ہوتا ہے۔ میٹنگ کے بعد نریندر مودی نے کہاکہ پوپ فرانسس کے ساتھ بہت اچھی ملاقات رہی۔ انہوں نے کئی امور پر بات چیت کی اور انہیں ہندستان آنے کی دعوت دی۔


      دنیا کی چوٹی کی 20معیشتوں کے گروپ جی۔20 (G-20 Summit 2021) کا دورزہ سالانہ سربراہی اجلاس آج یہاں میزبان اٹلی کی صدارت میں باضابطہ طورپر شروع ہوا جس میں کووڈ سے عالمی معیشت کو رفتار دینے کے اقدامات کے ساتھ ساتھ موسمیاتی تبدیلی اور عالمی سطح پر کووڈ ٹیکہ کاری مہم میں تعاون پر اقدامات کئے جانے کا امکان ہے۔ جی۔20سربراہی اجلاس میں ہندستان کی نمائندگی وزیراعظم نریندر مودی کررہے ہیں۔ اٹلی کے وزیراعظم ماریو دروگو نے مہمان رہنماوں کا استقبال کیا۔ وزیراعظم مودی کے اجلاس کی جگہ پہنچنے پر مسٹر دروگو نے اسٹیج سے نیچے اترکر انہیں گلے لگایا اور نہایت گرمجوشی سے انہیں اسٹیج پر لے گئے اور تصویرکھنچوائی۔

      روس کے صدر ولادیمیر پوتن اور چین کے صدر شی جنپیانگ کو چھوڑ کر جی۔20کے دیگر 18اراکین ممالک کے لیڈر شامل ہوئے جن میں امریکہ کے صدر جوبائیڈن بھی شامل ہیں۔
      جی۔20 سربراہی اجلاس اقوا م متحدہ موسمیاتی تبدیلی معاہدہ کے رکن ممالک کی گلاسگو (برطانیہ) میٹنگ سے پہلے ہورہا ہے۔ اس میں کاربن کے اخراج کو کم کرکے ماحولیاتی درجہ حرارت میں اضافہ کو روکنے کا مسئلہ عالمی رہنماوں کے ذہن میں ترجیح پر ہوگا۔
      وزیراعظم یہاں سے گلاسگو بھی جائیں گے۔ مسٹر مودی نے پانچ دن کا بیرونی دورہ شروع کرنے سے اپنے روانگی کے بیان میں کسی بھی معاہدہ میں کاربن معیشت کو مناسب جگہ دئیے جانے پر زور دیا تھا۔ہندستان اپنی بجلی کی ضرورت کے لئے اب بھی کوئلے پر منحصر ہے جبکہ کچھ مغربی ملک اور تنظیمیں کوئلہ سے چلنے والے پلانٹوں کی فنڈنگ پر روک لگانے کا مطالبہ کررہے ہیں۔کووڈ کے جھٹکے سے نکل رہی عالمی معیشت کو رفتار دینے کا مسئلہ بھی اس وقت عالمی برادری کے سامنے ایک بڑا معاملہ ہے۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: