آرامکو کے پلانٹوں پر حملوں کے بعد ایران،سعودی عرب کے درمیان بڑھتی کشیدگی

آرامکو کے پلانٹوں پر حملوں کے بعد خطہ میں نئی کشیدگی کا خطرہ بڑھ گیا ہے۔ سعودی عرب نے ایران کو تیل کی تنصیبات پر حملوں کا ذمے دار قرار دیا۔

Sep 22, 2019 10:26 AM IST | Updated on: Sep 22, 2019 10:26 AM IST
آرامکو کے پلانٹوں پر حملوں کے بعد ایران،سعودی عرب کے درمیان بڑھتی کشیدگی

آرامکو کے پلانٹوں پر حملوں کے بعد ایران،سعودی عرب کے درمیان بڑھتی کشیدگی۔(تصویر:نیوز18اردو)۔

آرامکو کے پلانٹوں پر حملوں کے بعد خطہ میں نئی کشیدگی کا خطرہ بڑھ گیا ہے۔ سعودی عرب نے ایران کو تیل کی تنصیبات پر حملوں کا ذمے دار قرار دیا۔سعودی وزیرمملکت برائے امور خارجہ عادل الجبیر نے کہا ہے کہ پورا یقین ہے کہ حملہ یمن سے نہیں شمال کی جانب سے کئے گئے۔ حملوں میں عالمی توانائی کی سیکورٹی کو بھی نشانہ بنایا گیا۔

انہوں نے کہا کہ سعودی عرب اپنے اتحادیوں سے آئندہ کے اقدام پر مشاورت کررہا ہے، تحقیقات کے نتائج کے منتظر ہیں۔دوسری جانب ایرانی وزیر خارجہ جواد ظریف کا کہنا ہے کہ ایران پر پابندیاں امریکی ڈپریشن کی علامت ہیں، ایک ہی ادارہ پر بار بار پابندیوں سے ظاہر ہے امریکی دباؤ کی پالیسی ناکام ہوگئی ہے۔ادھر پاسداران انقلاب نے متنبہ کیا ہے کہ جس ملک نے بھی ایران پر حملہ کیاتو اسے میدان جنگ بنادیں گے۔

Loading...

Loading...