உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Pakistan: کیا عمران خان عدم اعتماد کی بحث کو موخر کرنے کی کوشش کر رہے ہیں؟ جانیے تفصیل

    Youtube Video

    اپوزیشن جماعتوں کو 342 رکنی ایوان میں وزیراعظم خان کے خاتمے کے لیے 172 ارکان کی ضرورت ہے۔ انہوں نے حکمران اتحاد کے کچھ اتحادیوں اور پی ٹی آئی کے باغیوں کی مدد سے مطلوبہ طاقت سے زیادہ حمایت حاصل کی ہے۔

    • Share this:
      پاکستان کی پارلیمنٹ نے ہفتے کے روز اپنے اہم اجلاس کا آغاز منحرف وزیر اعظم عمران خان کے خلاف عدم اعتماد کی قرارداد کو اٹھانے کے لیے کیا جسے ملک کی تاریخ کے پہلے وزیر اعظم ہونے کے امکان کا سامنا ہے جسے عدم اعتماد کی تحریک میں ووٹ دیا گیا تھا۔ تاہم، پی ایم خان کے دوسرے منصوبے ہیں۔

      حکمران جماعت پاکستان تحریک انصاف، عمران خان کی پارٹی، ’’غیر ملکی سازش‘‘ پر بات چیت کرکے تحریک عدم اعتماد کو ناکام بنانے کی کوشش کر رہی ہے۔ ڈان اخبار کی رپورٹ کے مطابق ووٹنگ کے طریقہ کار میں رکاوٹیں پیدا کرنا یا اپوزیشن کے نامزد کردہ شہباز شریف کو ایوان کے نئے قائد کے طور پر منتخب کرنے سے روکنا۔ تحریک عدم اعتماد پر ووٹنگ کرتے ہوئے سپیکر اسد قیصر نے کہا کہ میں نے سپریم کورٹ کا فیصلہ پڑھا ہے اور اس پر عمل کروں گا لیکن ہم 'غیر ملکی سازش' پر بات کرنا چاہتے ہیں۔

      مزید پڑھیں: Pakistan politics: ملئے پاکستان کے نئے ‘شاہکار‘ شہباز شریف سے، جو بن سکتے ہیں عمران خان کی جگہ وزیر اعظم

      1880 کی دہائی کے اوائل میں امریکی سینیٹ سے شروع ہونے والا ایک فلیبسٹر، ایک سیاسی حربہ ہے جس میں قانون ساز ادارے کے ایک یا زیادہ ارکان مجوزہ قانون سازی پر بحث کو طول دیتے ہیں تاکہ فیصلے میں تاخیر یا مکمل طور پر روکا جا سکے۔ وزیر اطلاعات فواد چوہدری نے جمعہ کی شب اے آر وائی نیوز سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ان کی رائے ہے کہ اگرچہ عدم اعتماد کا ووٹ قومی اسمبلی کے ایجنڈے میں تھا تاہم ووٹنگ ہفتے کو نہیں ہونے کا امکان ہے۔

      مزید پڑھیں: Hajj: سعودی حکومت کا بڑا فیصلہ: عازمین کو مناسک کی ادائیگی کے دوران احتیاطی تدابیر پر عمل کرنا ہوگا ضروری: یہاں جانئے گائیڈ لایئنس


      اپوزیشن جماعتوں کو 342 رکنی ایوان میں وزیراعظم خان کے خاتمے کے لیے 172 ارکان کی ضرورت ہے۔ انہوں نے حکمران اتحاد کے کچھ اتحادیوں اور پی ٹی آئی کے باغیوں کی مدد سے مطلوبہ طاقت سے زیادہ حمایت حاصل کی ہے۔ جمعہ کو قومی اسمبلی سیکرٹریٹ کی جانب سے جاری کردہ آرڈر آف دی ڈے کے مطابق، پارلیمنٹ کے ایوان زیریں قومی اسمبلی (این اے) کے چھ نکاتی ایجنڈے میں تحریک عدم اعتماد پر ووٹنگ چوتھے نمبر پر ہے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: