உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    خطرناک حملے کر سکتا ہے داعش: امریکی سیکورٹی ایجنسی

    واشنگٹن۔ امریکہ کی سیکورٹی خفیہ ایجنسی کے ڈائریکٹر کا کہنا ہے کہ خونخوار دہشت گرد تنظیم دولت اسلامیہ (داعش) مستقبل میں خطرناک حملے کرسکتی ہے جو بین الاقوامی اثرات کا حامل ہو سکتا ہے۔

    واشنگٹن۔ امریکہ کی سیکورٹی خفیہ ایجنسی کے ڈائریکٹر کا کہنا ہے کہ خونخوار دہشت گرد تنظیم دولت اسلامیہ (داعش) مستقبل میں خطرناک حملے کرسکتی ہے جو بین الاقوامی اثرات کا حامل ہو سکتا ہے۔

    واشنگٹن۔ امریکہ کی سیکورٹی خفیہ ایجنسی کے ڈائریکٹر کا کہنا ہے کہ خونخوار دہشت گرد تنظیم دولت اسلامیہ (داعش) مستقبل میں خطرناک حملے کرسکتی ہے جو بین الاقوامی اثرات کا حامل ہو سکتا ہے۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:

      واشنگٹن۔ امریکہ کی سیکورٹی خفیہ ایجنسی کے ڈائریکٹر کا کہنا ہے کہ خونخوار دہشت گرد تنظیم دولت اسلامیہ (داعش) مستقبل میں خطرناک حملے کرسکتی ہے جو بین الاقوامی اثرات کا حامل ہو سکتا ہے۔ سیکورٹی خفیہ ایجنسی کے ڈائریکٹر میرن کور لیفٹننٹ جنرل ونسنٹ اسٹوورٹ نے ایک سیکورٹی کانفرنس میں کہا کہ داعش نے مالی، تیونس، صومالیہ، بنگلہ دیش اور انڈونیشیا میں اپنی شاخیں قائم کر لی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ شام اور عراق کے ایک حصے پر قبضہ کرکے وہاں اپنی خلافت کا اعلان کر چکی اس دہشت گرد تنظیم کی اگر توسیع مصر کے سینائی علاقوں تک ہو جاتی ہے تو انہیں کوئی حیرت نہیں هوگی۔


      انهوں نے کہا کہ گزشتہ سال تک داعش نے عراق اور شام تک محدودعلاقے تک اپنا تسلط قائم کیا تھا لیکن اب اس نے لیبیا،مصر کے سینائی علاقے، افغانستان، نائیجیریا، الجزائر، سعودی عرب، یمن اور كراكیشس تک اپنی پہنچ بنا لی ہے۔ انہوں نے کہا کہ وہ اپنے حملوں کومزید تیز کر سکتا ہے اور انہیں زیادہ مہلک بناکر حملے کر سکتا ہے تاکہ مغربی ممالک میں اس کا سخت رد عمل هو۔ یہ دہشت گرد گروہ نہ صرف مغربی ممالک کے خلاف اپنے تشدد میں اضافہ کرنا چاہتا ہے بلکہ شیعہ مسلمانوں کے خلاف بھی تاکہ شیعہ اور سنیوں کے درمیان کشیدگی بڑھ سکے۔

      First published: