உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Israel: اسرائیلی حکومت کی ایک بڑی سیاسی ناکامی! حزب اختلاف کے ہاتھوں شکست کا سامنا

    اسرائیل کے وزیر اعظم نفتالی بینیٹ (Naftali Bennett)

    اسرائیل کے وزیر اعظم نفتالی بینیٹ (Naftali Bennett)

    اسرائیلی مبصرین کے مطابق دائیں بازو کی اپوزیشن کی قیادت سابق وزیر اعظم بنجمن نیتن یاہو کر رہے ہیں، وہ اسرائیلوں کی باز آبادکاری کے حامی اقدامات کی تجدید کو نہیں روکیں گے۔

    • Share this:
      اسرائیل کی حکومت کو پیر کے روز حزب اختلاف کے ہاتھوں شکست کا سامنا کرنا پڑا جس نے حکمران اتحاد کے لیے ایک چیلنج کے طور پر مقبوضہ مغربی کنارے کی بستیوں میں اسرائیلی قانون کو برقرار رکھنے کے حق میں ووٹ دیا۔

      مغربی کنارے پر اسرائیل کے 1967 کے قبضے کے بعد سے نافذ العمل قانون مغربی کنارے میں آباد کاروں کو وہی حقوق فراہم کرتا ہے جو اسرائیل کے شہریوں کے ہوتے ہیں۔ اسرائیل میں ہر پانچ سال بعد پارلیمنٹ سے خود بخود توثیق ہو جاتی ہے لیکن وسیع اتحاد کے لیے دو جماعتیں عرب رام پارٹی کے ایک رکن اور بائیں بازو کی میرٹز پارٹی کے ایک رکن نے بل کے خلاف ووٹ دیا۔ جس سے اسرائیلی حکومت کی ایک بڑی سیاسی ناکامی ہوئی ہے۔

      ان کی بغاوت اس لمحے کے لیے مغربی کنارے میں اسرائیلی قانون کے تسلسل پر سوالیہ نشان نہیں ہے، بلکہ وزیر اعظم نفتالی بینیٹ کی زیر قیادت حکومت کے استحکام پر سوالیہ نشان ہے۔ اپوزیشن نے اعلان کیا تھا کہ وہ صرف حکومت پر عدم اعتماد ظاہر کرنے کے لیے بل کے خلاف ووٹ دے گی، اتحاد کے لیے 52 کے مقابلے میں کل 58 ووٹ اکٹھے ہوئے۔

      یہ بھی پڑھیں:
      OIC: او آئی سی نے ہندوستان کو بنایا شدید تنقید کا نشانہ، اقوام متحدہ سے ایکشن لینے کی اپیل

      حکومت نے حال ہی میں ایوان میں اپنی اکثریت کھو دی ہے، جس نے ’یہودا اور سامریہ کے قانون‘ کے خلاف مظاہرے کی منزلیں طے کیں- اگر اکثریتی تائید کو 1 جولائی کو منظور نہیں کیا جاتا ہے، تو وہاں رہنے والے 475,000 سے زیادہ اسرائیلیوں کو دوسرے اسرائیلیوں جیسے حقوق نہیں ملیں گے۔

      مزید پڑھیں:Remarks on Prophet:خلیجی ممالک کو کیوں اتنی ترجیح دے رہا ہندوستان، جانیے کیا ہیں اقتصادی، سفارتی اور سیاسی نقصانات

      اسرائیلی مبصرین کے مطابق دائیں بازو کی اپوزیشن کی قیادت سابق وزیر اعظم بنجمن نیتن یاہو کر رہے ہیں، وہ اسرائیلوں کی باز آبادکاری کے حامی اقدامات کی تجدید کو نہیں روکیں گے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: