ہوم » نیوز » عالمی منظر

غزہ پراسرائیل کے شدید فضائی حملے جاری، تقریباً200فلسطینی جاں بحق، بچے اورخواتین بھی شامل

اتوار کے حملوں میں غزہ میں ہلاکتوں کی تعداد کم از کم 197 ہوگئی۔ جس میں درجنوں خواتین اور بچے بھی شامل ہیں، جبکہ 1230 افراد زخمی ہوئے۔ اسرائیل میں دو بچوں سمیت 10 افراد کی ہلاکت کی اطلاع ہے۔

  • Share this:

اسرائیلی جنگی طیاروں نے غزہ شہر کے متعدد مقامات پر علی الصبح نئے بھاری فضائی حملوں کا سلسلہ شروع کیا ہے۔ جس کی وجہ سے غزہ کے کئی علاقے تہس نہس ہوگئے ہیں اور عوامی املاک کو شدید نقصان پہنچا ہے۔اطلاعات کے مطابق پیر کے روز دھماکوں کے نتیجے میں 10 منٹ تک شمال سے جنوب تک فلسطین کا محاصرہ کیا گیا جس میں بڑی تعداد میں لوگ زخمی اور وسیع تر علاقے متاثر ہوئے ہیں۔اے ایف پی کے صحافیوں نے بتایا کہ درجنوں میزائل گنجان آباد ساحلی علاقے کے مختلف علاقوں میں گر کر تباہ ہوئے۔ آج کے حملوں میں ابھی تک کسی جانی نقصان کی کوئی اطلاع موصول نہیں ہوئی ہے۔ لیکن بہت سے لوگ زخمی ہوئے۔


اتوار کے روز غزہ پر اسرائیلی فضائی حملوں نے تین عمارتوں کو مکمل تباہ کردیا ہے اور کم از کم 42 شہریوں کو ہلاک کردیا ، حکام نے بتایا کہ اسرائیل کے فلسطینی محاذ پر حملہ کرنے کے بعد اسرائیل کا یہ اب تک کا سب سے مہلک حملہ ہے۔اتوار کے حملوں میں غزہ میں ہلاکتوں کی تعداد کم از کم 197 ہوگئی۔ جس میں درجنوں خواتین اور بچے بھی شامل ہیں، جبکہ 1230 افراد زخمی ہوئے۔ اسرائیل میں دو بچوں سمیت 10 افراد کی ہلاکت کی اطلاع ہے۔



بچانے والے کو ملبے کے ایک چھید پر چیختے ہوئے دیکھا جاسکتا ہے۔ ’’کیا تم مجھے سن سکتے ہو؟‘‘ اس پر ایک شخص نے انھیں کہا کہ ’’کیا آپ ٹھیک ہیں؟" اس کے بعد وہاں بچ جانے والے شخص کو باہر نکالنے میں کامیابی حاصل ہوئی اور انھیں اسٹریچر پر روانہ کردیا۔

غزہ کی وزارت صحت (Gaza Health Ministry ) نے بتایا کہ جاں بحق ہونے والوں میں 16 خواتین اور 10 بچے بھی شامل ہیں ، جبکہ حملے میں مزید 50 افراد زخمی ہوئے ، اور کہا کہ امدادی سرگرمیاں ابھی جاری ہیں۔
'وحشت کے لمحات'

جب امدادی کارکن ملبے سے لاشیں نکالنے کی کوشش کر رہے تھے ، اسرائیلی جنگی طیاروں نے اپنے مقامات کے قریب میزائل گرائے۔ ریسکیو کارکنوں کا کہنا تھا کہ وہ اپنی کاروائیاں کرتے ہوئے انہیں نشانہ بنایا جارہا ہے۔فلسطینی صحت کے عہدیداروں نے بتایا کہ صبح سے پہلے حملے غزہ شہر کے وسط میں واقع مکانات پر تھے۔ اسرائیلی فوج کے ترجمان نے کہا ہے کہ وہ ان خبروں پر غور کریں گے۔

فضائی حملوں میں تباہ حال عمارت سے ملبہ صاف کرنے کے لئے کام کرنے والے فلسطینیوں نے ایک خاتون اور ایک شخص کی لاشیں برآمد کیں۔بچاؤ کی کوششوں میں مدد فراہم کرنے والے سات بچوں کے والد ، محمود حمید نے کہا ، "یہ خوفناک لمحے ہیں جس کی کوئی بھی مثال نہیں دے سکتا‘‘۔
Published by: Mohammad Rahman Pasha
First published: May 17, 2021 10:29 AM IST